علی ظفر پر ایک اور ”جنسی الزام“

کراچی: گلوکارہ میشا شفیع کی جانب سے گلو کار علی ظفر پر جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزامات کے بعد ایک صحافی خاتون نے بھی علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا الزام لگادیا۔گزشتہ روز پاکستان کی نامور گلوکارہ اور اداکارہ میشا شفیع نے ٹوئٹر پر گلوکار علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا سنگین الزام لگاتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں علی ظفر نے ایک بار نہیں بلکہ کئی مرتبہ جنسی طور پر ہراساں کیا۔ میشا شفیع کےٹوئٹ سے میڈیا اورسوشل میڈیا پر ایک بھونچال آ‌گیا تھا اورمیشا شفیع کے کا ٹویٹ ٹاپ ٹرینڈ بن گیاتھا۔
میشا شفیع کے بعد صحافت کے شعبے سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون ماہم جاوید نے بھی علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا الزام لگاتے ہوئے میشا شفیع کی بہادری اور جرات کو سراہا ہےاور کہا ہے کہ میشا کی جانب سے کئے گئے ٹوئٹ نے انہیں بھی ایک واقعے کی یاد دلادی جو کافی سال پہلے پیش آیا تھااور علی ظفر کے حوالے سے ہی تھا۔ماہم جاوید نے ٹوئٹ کیاکہ علی ظفر نے ان کی کزن کا بوسہ لینے کی کوشش کی اور اسے ریسٹ روم میں دھکا دیا لیکن خوش قسمتی سے میری کزن کی دوست وہاں آگئی اور اس نے علی ظفر کو وہاں سے دھکا دے کر ہٹایا۔علی ظفر کی جانب سے ان الزامات کی تردید کی گئی ہے.”“

اپنا تبصرہ بھیجیں