بغاوت کا خدشہ،حکومت کا سجادہ نشین سیال شریف سے مدد لینے کا فیصلہ

لاہور: حکومت پنجاب نے سجادہ نشین سیال شریف پیر حمیدالدین سے رابطہ کیا ہے، حکومتی اراکین کے ایک گروپ کی طرف سے اسلام آباد دھرنے کے مطالبات منوانے پر استعفیٰ کی دھمکی دی گئی تھی۔ اراکین میں 6 ایم این اے شامل ہیں۔رکن پنجاب اسمبلی غلام نظام الدین سیالوی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ آج کسی وقت شام کو اعلیٰ سطح کے حکومتی نمائندے پیر سیال شریف سے ملاقات کریں گے۔
ذرائع کے مطابق 4 لیگی ارکان قومی اسمبلی سمیت 10 سے زائد اراکین پنجاب اسمبلی نے پیر صاحب کو اپنے استعفے کے آپشن کا استعمال کرنے کا اختیار دے رکھا ہے۔ارکان قومی اسمبلی میں حامد حمید، شیخ اکرم، زوالفقار بھٹی، غلام بی بی بحروانہ، طاہر اقبال چوہدری جبکہ پنجاب اسمبلی کے اراکین میں نظام الدین سیالوی، عبدالرزاق ڈھلوں، ملک وارث کلو سمیت محمد خان بلوچ، مولانا رحمت اللہ، رانا منور غوث شامل ہیں۔اس کے علاوہ خرم سیال، ملک کرم الہٰی بندیال اور رکن قومی اسمبلی غلام محمد لالی بھی شامل ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں