کوئٹہ:فائرنگ سے ایس پی انویسٹی گیشن سمیت 4افراد جاں بحق

کوئٹہ: کوئٹہ میں پولیس فورس مسلسل دہشت گردوں کے نشانے پر ہے، ایک ہفتے کے اندر ایک اور پولیس آفیسر پر حملہ کیا گیا۔چھے روز پہلے ڈی آئی جی حامد شکیل کو دو پولیس اہل کاروں کے ساتھ خود کش حملے میں شہید کردیا گیا تھا۔نواں کلی کے علاقے میں ایس پی انویسٹی گیشن محمد الیاس کی گاڑی پر دہشت گردوں نے گولیاں برسا دیں۔
فائرنگ سے ایس پی محمد الیاس، ان کی اہلیہ فرزانہ، بیٹا ایڈووکیٹ محمد عدیل اور 7برس کا پوتا عبدالوہاب شہید ہوگئے۔کبھی ٹارگٹ کلنگ، کبھی خود کش حملہ، ایمبولینسوں کے چیختے چلاتے سائرن، اسپتالوں میں رقت آمیز مناظر اور بلوچستان کا دارالحکومت کوئٹہ، دہشت گردو ں نے ایک بار پھر پولیس افسر کو نشانہ بنایا۔
ایس پی انویسٹی گیشن محمد الیاس نواحی علاقے نواں کلی میں اپنے گھر سے نکل کر تھوڑا آگے ہی گئے تھے کہ گھات لگائے دہشت گردوں نے ان پر حملہ کردیا۔فائرنگ کے اس واقعے میں ایس پی انویسٹی گیشن محمد الیاس، ان کی اہلیہ فرزانہ، بیٹے ایڈووکیٹ محمد عدیل اور 7برس کا پوتا عبدالوہاب شہید ہوگئے، جبکہ ایس پی انویسٹی گیشن کی پوتی دہشت گردی کی ا س واردات میں زخمی ہوگئی، جس کی حالت تشویش ناک بتائی جارہی ہے۔
واقعے میں شہید ہونے والوں کی میتوں اور زخمی بچی کو سول اسپتال کوئٹہ منتقل کیا گیا، دوسری جانب دہشت گردی کی واردات کے بعد قانون نافذ کرنے والے ادارے حرکت میں آئے، پولیس اور ایف سی نے پورے علاقے کو گھیر کر سرچ آپریشن کا آغاز کردیا۔
اس سے پہلے 9نومبر کو ایئر پورٹ روڈ پر ہونے والے ایک خود کش حملے میں ڈی آئی جی پولیس حامد شکیل 2پولیس اہل کاروں کے ساتھ شہید ہوگئے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں