آل راؤنڈر کے طور پر پہچان بنانا چاہتا ہوں: حسن علی

ابو ظہبی: پاکستانی فاسٹ بولر حسن علی نے کہا ہے کہ ٹیسٹ کرکٹ نسبتا زیادہ مشکل ہے، ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی کے برعکس اس فارمیٹ میں انھیں خود کو بہترین ثابت کرنے کے لئے کچھ وقت درکار ہوگا۔2 ٹیسٹ میچوں میں 6 وکٹیں حاصل کرنے والے 23 سالہ فاسٹ بولر نے کہا کہ یہ تاثر غلط ہے کہ میں مسلسل کمر کی تکلیف کا شکار ہوں۔ دورہ ویسٹ انڈیز میں گروین انجری کے بعد ورلڈ الیون کےخلاف لاہور میں کمر درد کے سبب میں دوسرا ٹی 20 نہ کھیل سکا البتہ دبئی ٹیسٹ میں عدم شرکت کی وجہ سے گھٹنوں میں تکلیف تھی۔چیمپیئنز ٹرافی میں 13 وکٹ کی پرفارمنس کے ساتھ بہترین بولر کا اعزاز حاصل کرنے والے حسن علی نے کہا کہ ہند سے شکست اور پاکستان سے 2ون ڈے ہارنے کے بعد سری لنکا کی ٹیم دباو کا شکار ہے اور ہمیں اس صورتحال سے فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ سیریز کے باقی میچوں میں بھی سری لنکن ٹیم کومشکلات میں ڈالیں گے۔23ون ڈے میچوں میں 46 وکٹیں لینے والے فاسٹ بولر نے اس عزم کا اظہار کیا کہ مستقبل میں وہ بولنگ کے ساتھ اپنی بیٹنگ پر بھی توجہ مرکوز کریں گے تاکہ بطو رآل راونڈر اپنی صلاحیتوں سے ٹیم کی طاقت میں اضافہ کر سکیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں