ساہیوال، نیب یافتہ سی ای او ایجوکیشن نے اساتذہ کی تذلیل کو معمول بنا لیا

ساہیوال(بیورورپورٹ)سی ای اوتعلیم پنجاب حکومت کی اوپن ڈورپالیسی وگڈگورننس کی نفی کرنے لگا،میل ٹیچرزسے سخت رویہ روارکھاجانے لگا،دلبرداشتہ اساتذہ سجاداسلم کے ہاتھوں بے عزتی پر مجبور،آفس آنے پر سب کو عزت دیتاہوں،باری کاانتظارکریں،سی ای اوکاموقف۔پنجاب حکومت نے صوبہ بھرمیں تمام سرکاری دفاترتک شہریوں کی رسائی یقینی بنانے کیلئے اوپن ڈورپالیسی رائج کررکھی ہے اورگڈگورننس کے تحت عام شہریوں اورماتحتوں کے ساتھ نرم رویہ اختیارکرنے والے ہدایات جاری کررکھی ہیں۔ساہیوال محکمہ تعلیم سے وابستہ مردسٹاف خصوصاََ میل ٹیچرزحضرات اپنے سی ای اوکے معاندانہ رویہ کے شاکی ہیں مختلف سرکاری سکولوں میں تعینات ٹیچرحضرات سمیت دیگرعملہ چیف ایگزیکٹوآفیسر ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی سجاداسلم کے رویہ کیخلاف پھٹ پڑا،میل سٹاف نے اپنی شناخت پوشیدہ رکھنے کی استدعاکرتے ہوئے بتایاکہ سی ای اوآفس میل ٹیچنگ سٹاف کیلئے ایک عقوبت خانہ بن چکاہے۔طلبی پر پیش ہونے والوں کے ساتھ ساتھ اپنے روزمرہ کے کاموں کیلئے دفترجانے والے مردحضرات کو سجاداسلم طویل انتظارکرواتے ہیں۔مرداساتذہ کے ساتھ سخت رویہ روارکھاجاتاہے جو اکثراوقات توہین آمیزی کی حدوں کوچھونے لگتاہے۔افسرموصوف کی اجازت کے بغیر اساتذہ وعام شہریوں کو دفترمیں داخل ہونے نہیں دیاجاتا۔سی ای اوسجاداسلم نے مرداساتذہ کے الزامات کو بے بنیاد قراردیتے ہوئے کہاہے کہ آفس آنے پر سب کو عزت دیتاہوں۔دفترکے دروازے سب کیلئے کھلے ہیں۔ یاد رہے موجودہ سی ای او جب شیر گڑھ میں بطور پرنسپل تعینات تھے تو ان کے اپنے سکول کے اساتذہ نے ان کے خلاف اختیارات کے ناجائز استعمال اور این ایس بی میں خوردبرد پر نیب میں درخواست دی تھی جب کہ ڈی ای او سیکنڈری اوکاڑہ نے ان کے خلاف انکوائری کا حکم دیا تھا تاہم اپنے اثر و رسوخ کی بنا پر سجاد اسلم نے سی ای او کا عہدہ حاصل کر لیا اور اب معمولی معاملات پر خواتین اور مرد اساتذہ کو ملازمت سے معطل کیا جارہا ہے اور این ایس بی کے فنڈز سے اپنا حصہ وصول کرنے کے لیے نام نہاد صحافیوں کے ذریعے حصہ دینے سے انکار کرنے والے ہیڈ ماسٹر صاحبان کے خلاف خبریں لگو کر انھیں بلیک میل کیا جا رہا ہے.انگوٹھا چھاپ صحافی ہر وقت سی ای او کے دفتر میں پائے جاتے ہیں جن کی مدد سے اساتذہ کو بلیک میل کرنے کا سلسلہ عروج پر ہے جب کہ یہی صحافی سی او کے چھاپوں کی خبریں لگا کر ان کے اقدامات کو سراہتے نظر آرہے ہیں. جب کہ اساتذہ کے مطابق سی ای او صفائی کے بہترین انتظامات کے باوجود صفائی اور دیگر معاملات کو وجہ بنا کر انھیں معطل کر رہے ہیں. دوسری جانب ساز باز کرنے والے دلالوں کے ذریعے بعض معطل اساتذہ کو بحال بھی کیا گیا ہے. اساتذہ نے وزیر تعلیم پنجاب اور وزیر اعلیٰ سے سی ای او کا محاسبہ کرنے کی اپیل کی ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں