ساہیوال، بلوم فیلڈ ہال سکول کی انتظامیہ نے اسلامی کتب جلا ڈالیں

ساہیوال(ایس این این) بلوم فیلڈ سکول ساہیوال کی انتظامیہ نے اسلامیات کی کتب کو کھلے میدان میں آگ لگا دی۔اسلامی کتب کو نذر آتش کرنے پر عوام میں اشتعال۔”جاؤ میں یہودی ہوں ایسا کرتا رہوں گا “۔ عوام کے احتجاج پر سکول پرنسپل کی دھمکیاں۔ سکول کے گارڈز اور مشتعل عوام کے مابین نوبت ہاتھا پائی تک جا پہنچی۔اسلامی کتب نذر آتش کرنے والوں کو قرار واقعی سزا دے کر سکو ل بند کیا جائے، عوام کا کمشنر ساہیوال سے مطالبہ۔ تفصیل کے مطابق بلوم فیلڈ ہال سکول کی انتظامیہ نے فتح شیر کالونی کیمپس کے ساتھ واقع گراؤنڈ میں سیشن 2017ء کی اسلامیات کی کتب کو نذر آتش کر دیا۔ ذرائع کے مطابق سکول انتظامیہ کئی روز سے یہ معمول اپنائے ہوئے ہے اور روزانہ سینکڑوں کتب کو آگ لگائی جاتی ہے۔ کتب پر قرآنی آیات اور رسولﷺ کا نام بھی موجود ہے۔ مقامی لوگوں کے مطابق اسلامی کتب جلانے پر جب وہ سکول پرنسپل کے پاس گئے تو مبینہ طور پر اس نے کہا کہ میں یہود ی ہوں جاؤ جو کرنا ہے کر لو ہم کتب جلاتے رہیں گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ کتب نہیں بلکہ سکول کا ادبی مجلہ ہے جس کی کاپیاں جلائی گئی ہیں۔ ان میں آیات اور اسلامی نام بکثرت موجو د ہیں۔ عوام نے جب ایک سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ “عوام کی آواز ” کے ساتھ سکول کے گیٹ پر احتجاج کیا تو گارڈز نے انھیں تھانے لے جانے کی دھمکیاں دیں اور کتب جلانے کے معاملے پر ڈھٹائی کا مظاہرہ کیا۔ عوام نے سکول ایجوکیشن انتظامیہ اور کمشنر ساہیوال سے مطالبہ کیا ہے کہ اسلامی کتب کو جلانے اور بے حرمتی کرنے پر سکول انتظامیہ کے خلاف کارروائی کی جائے اور سکول کو فوری طور پر بند کیا جائے۔ مزید عوام کی آواز ساہیوال کی یہ ویڈیو دیکھیئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں