چیف جسٹس کاموبائل کمپنیز کی جانب سے ٹیکس کٹوتی پر از خود نوٹس

اسلام آباد( ایس این این ) چیف جسٹس ثاقب نثار نے موبائل فون کمپنیز کی جانب سے موابئل ریچارج پر ٹیکس کٹوتی کا از خود نوٹس لے لیا. از خود نوٹس کی سماعت 8 مئی کو ہو گی. ذرائع کے مطابق سوشل میڈیا پر موبائل فون صارفین کی جانب سے 100 روپے کے کارڈ پر کی جانے والی کٹوتی اور کالز پر ٹیکس کے خلاف مہم چیف جسٹس تک پہنچ گئی جس پر چیف جسٹس نے از خود نوٹس لیتے ہوئے موبائل فون کمپنیز کے نمائندوں کو طلب کر لیا ہے. ذرائع کے مطابق 100 روپے کے موبائل کارڈ پر کمپنیز 25 روپے فوری طور پر منہا کر لیتی ہیں جب کہ باقی بچ جانے والے 75 روپے پر بھی فی کال ٹیکس لگا کر کٹوتی کی جاتی ہے جس سے روزانہ کی بنیاد پر 90 کروڑ روپے سے زائد کا ٹیکس جمع ہوتا ہے. تا ہم کمپنیز یہ ٹیکس سرکاری کھاتے میں جمع نہیں‌کرواتیں اور عام صارف پر بے جا ٹیکس عائد کرتی ہیں. چیف جسٹس نے ازا خود نوٹس لیتے ہوئے استفسار کیا کہ یہ کٹوتیاں کس مد میں کی جاتی ہیں؟ یہ عوامی مسئلہ ہے موبائل فون سروس فراہم کرنے والی کمپنیز کو اس کا جواب دینا ہوگا.موبائل فون کارڈزکٹوتی ازخود نوٹس کی سماعت منگل کوہوگی.

اپنا تبصرہ بھیجیں