چیف جسٹس سپیشلسٹ ڈاکٹرز کی فیس کم کروائیں:‌عوامی مطالبہ

ساہیوال (بیورورپورٹ)اتائی ڈاکٹر زکے خلاف کریک ڈاؤن احسن اقدام ہے‘ اتائی ڈاکٹر ز کے خلاف کارروائی پر چیف جسٹس کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں‘ عوامی وسماجی حلقوں کا ڈاکٹر ز کی فیسیں کم کرنے کامطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق عوام نے چیف جسٹس آف پاکستان کے حکم پر اتائیوں کے خلاف جاری مہم کو سراہاہے۔ اتائی ڈاکٹرز مریضوں کو علاج معالجہ کے ذریعے مختلف بیماریوں میں مبتلا کررہے تھے۔ اتائیوں کے خلاف کریک ڈاؤن سے گلی محلوں میں بیٹھے ان پڑھ ڈاکٹرز کا خاتمہ تو ہواہے لیکن کریک ڈاؤن کے دوران کوالیفائیڈ ڈسپنسرز کے خلاف بھی کارروائی ہوئی ہے جس کے باعث غریب عوام سستے علاج معالجہ سے محرو م ہوئے ہیں کیونکہ ڈاکٹر ز اور سپیشلسٹ ڈاکٹرزکی بھاری فیسوں کی وجہ سے غریب عوام انہیں چیک کرانے سے مالی حالات کا شکار ہوتے ہیں۔ عوامی سماجی حلقوں کا کہناہے کہ ڈاکٹرز سے علاج معالجہ کرانا غریب وعام آدمی کی پہنچ سے دور ہے۔ ڈاکٹرز اپنے پرائیویٹ کلینکوں پر 1000سے 800روپے چیک اپ فیس لے رہے ہیں اور ادویات الگ خریدنی پڑتی ہیں جس کے باعث غریب آدمی عطائیوں کے پاس علاج معالجہ کے لئے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سرکاری ہسپتالوں میں بھی ڈاکٹر زکی کمی ہے اور ڈاکٹرز بھی مریض کو نرسز کے رحم وکرم پر چھوڑ دیتے ہیں۔ عوامی وسماجی حلقوں نے چیف جسٹس سے مطالبہ کیاہے کہ وہ ڈاکٹر ز کی سرکاری ہسپتالوں میں ڈیوٹی کو یقینی بنانے اور پرائیویٹ کلینکس پر فیسیں 1000سے کم کرکے 200 روپے تک کروانے پر عملدرآمد کروائیں تاکہ غریب و عام آدمی اپنا علاج معالجہ ڈاکٹرز سے کرواسکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں