ہمارا مقابلہ سیاسی قوتوں سے نہیں نادیدہ قوتوں سے ہے: نواز شریف

ساہیوال(ایس این این) سابق وزیر اعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ آئندہ انتخابات میں (ن) لیگ کا مقابلہ پی پی یا تحریک انصاف سے نہیں بلکہ نادیدہ قوتوں سے ہے۔ آج یہاں ساہیوال میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف نے کہا کہ ہم نے ملک سے دہشت گردی ختم کی، کراچی میں امن قائم کیا، لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کیا. آج پھر پوچھتا ہوں کہ مجھے کیوں نکالا، میں دو مرتبہ پہلے بھی وزیراعظم رہا کیا میں نے کرپشن کی، کیا اس لیے نکالا مجھے کہ میں نے بیٹے سے تنخواہ نہیں لی دوسری طرف حجاج کرام کامال کھا نے والوں سے کوئی پوچھنے والا ہے یا نہیں۔
نوازشریف نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئےکہا کہ لاڈلے کی دال نہیں گل رہی وہ کچی فیل ہوگئے ہیں پشاور میں دیکھ لیں کون سا نیا پاکستان بن گیا؟ پشاور ٹوٹا پھوٹا ہے بلکہ پورے خیبرپختونخوا کا حال برا ہے ۔
سابق وزیراعظم پاکستان میاں محمدنوازشریف نے کہاہے کہ 70سال کی تقدیر بدلنے اور ووٹ کو عزت دینے کا وقت آگیا ہے یہ الیکشن نہیں ریفرنڈم ہونا چاہئے۔ پاکستان کو ایٹمی قوت بنانے‘ایٹمی دھماکے کرنے کرنے‘ عوام کی خدمت کرنے اور عزت کا سودا نہ کرنے والے وزیراعظم کو ہٹادیاجاتاہے اب صرف ایک ہی راستہ واپس لانے کا ہے کہ اتنے ووٹ دو کہ نوازشریف اور ن لیگ اسمبلی میں جائے تو ایسے فیصلے کو اٹھا کر باہر پھینک دیا جائے اگر کامیاب کراؤ گے تو ایسے فیصلے کو ختم کیاجاسکتاہے۔ دوسروں کو ووٹ دینا ایسے ہی ہے جیسے پٹھوؤں کو ووٹ دینا ہے۔عمران خان پٹھو بن چکے ہیں اس نے سودا کرلیا ہے۔ مخالف قوتوں کو شکست فاش دینا ہو گا۔ اب ہمارا مقابلہ عمران اور زرداری سے نہیں ایسی قوتوں سے مقابلہ ہے جو نظر نہیں آتیں۔عمران یا آزاد افراد یا زرداری کو ووٹ دو گیے تو ایسا سمجھا جائے گا کہ ان قوتوں کو ووٹ دیا۔وہ یہاں شیخ ظفر علی سٹیڈیم ساہیوال میں جلسہ عام سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر مریم نواز‘ رانا ثناء اللہ‘ پرویزرشید‘جاوید لطیف‘پیر سید عمران احمد شاہ‘ ملک ندیم کامران‘ محمدارشد ملک‘ ملک محمدرمضان‘چوہدری اشرف‘چوہدری طفیل جٹ‘ پیر خضر حیات شاہ کھگہ‘اسد خان بلوچ‘چوہدری ساجد نعیم ہیپی اور دیگر شہروں سے آئے ممبران قومی و صوبائی اسمبلی بھی موجود تھے۔انہوں نے کہاکہ ساہیوال کا جذبہ دیکھ کر مجھے نشہ آرہا ہے اس کا مقابلہ 2013ء کے مجمع کے ساتھ کر رہا تھا جذبہ وہ بھی زیاد ہ تھا آج اس کو بھی مات دے گیا ہے ایسا لگتاہے کہ نوازشریف کاپیغام ووٹ کی عزت دو گھر گھر پہنچ گیا ہے۔
عمران خان کے لاہور کے جلسہ کے بارے ذکر کرتے ہوئے کہاکہ ٹی وی پر دیکھا دونوں جذبے دیکھے کوئی موازنہ نہیں کوئی مقابلہ نہیں ایسا لگا جلسہ لاہور دا مجمع پشور دا تے ایجنڈا کسے ہور دا۔یہ ایسا ہی ہے کہ پشاور یا سوات جلسہ کروں اور لوگ ساہیوال کے لیکر جاؤں۔ لاڈلا صاحب آپ کی دال گل نہیں رہی پہلی میں بھی فیل ہوئے تھے اب کچی میں بھی فیل ہو گئے۔ انہوں نے کہاکہ کے پی کے میں سڑکیں ٹوٹی ہوئی‘ کچرا بکھرا ہوا باقی کے پی کے کا حال اس سے بھی برا۔ کہتے تھے کہ 50میگا واٹ بجلی بنائیں گے کونسی لوڈشیڈنگ ختم کی۔ لوڈشیڈنگ صرف ن لیگ اور نوازشریف نے ختم کی‘دہشتگردی کو ختم کیا۔ کراچی کو دوبارہ امن دیا۔ سی پیک لائے پاکستان ترقی کی منازل طے کررہا تھا بدقسمت لوگ یہ کیا سلوک کرتے ہیں نوازشریف کو ڈس کوالیفائی کیا ملکی ترقی کیلئے کام کر رہا تھا۔ ساہیوال کو یونیورسٹی دی‘میڈیکل کالج بھی بن گیا۔ موٹروے قریب سے گزر رہی ہے دوبارہ اقتدار ملا تو منی موٹروے بھی بنے گی۔ نوازشریف نے چارسالوں میں ایک دمڑی بھی کرپشن نہیں کی۔ مجھے کیوں نکالا۔ بیٹے سے تنخواہ نہ لی تو وزیراعظم کونکال دیا دبئی کا ویزہ رکھنے پر نکال دیا جنہوں نے اربوں کھربوں لوٹے اور حاجیوں کا مال کھایا ملکی ترقی کو سبوتاژ کیا ایٹمی دھماکے کئے امریکی صدر کی آفر کو ٹھکرایا خودمختاری پر سودا نہیں کیا۔انہوں نے کہاکہ سینٹ الیکشن میں عمران خان نے لائن لگا کر تیر کو ووٹ دیئے اس نے سودا کرلیا ہے طاہرالقادری کے لاہور جلسے میں ایک دوسرے کے سامنے نہ آنے کی ملی بھگت کی تھی شرم کرو لوگوں کو بیوقوف نہ بناؤ۔ یہ بھیڑ بکریاں نہیں بکنے والے لوگ نہیں خادم ڈٹ جانے والے ہیں جو عزت کا سودا نہیں کریں گے فیصلہ منظور نہیں۔ خود عمران خان اور وکلاء نے کہاکہ نوازشریف کے خلاف فیصلہ کمزور ہے 70مرتبہ نیب میں پیش ہو چکا ہوں خدمت کرنے والے کا یہ حال کیا جاتاہے۔ عوام کی خدمت کے ساتھ یہ سلوک۔ 70سال کی ذلت و رسوائی دوہرائیں گے نہیں نوجوان ڈگریاں والے ہیں ان کے گھروں میں روشنی کریں گے نوازشریف کے ساتھ ملکر پاکستان کی ترقی کی مثال بنائیں گے ذلت و رسوائی سے باہر نکالیں گے اگلے 70سال قوم کے ہوں گے۔
یہ میری ذات کا مسئلہ نہیں فیصلے کو ختم کرنے کیلئے اتنے ووٹ دو کہ فیصلہ ختم ہو جائے۔ انہوں نے کہاکہ نوازشریف نے اپنا وعدہ پورا کیا ہے آج بھی وعدہ کروں گا شب برات ہے وعدہ پورا کروں گا بے گھر لوگوں کو چھت دوں گا انہیں گھر دوں گا وہ کہیں گے کہ ہمارے مسئلوں کو بھی ختم کیا ہے۔یہ الیکشن نہیں ریفرنڈم ہونا چاہئے۔جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے کہاکہ میرے شیرو کہ آپ نے مخالفین کی دوڑیں لگادی ہیں سب طاقتیں ان کے ساتھ ہیں لیکن عوام نوازشریف کے ساتھ ہیں۔کل پی ٹی آئی کے جلسہ میں پاکستان سے لوگ اکٹھے کئے گئے پنجاب کے لوگوں نے بات سننے سے انکار کردیا ہے لوگ جان گئے ہیں تمہاری حیثیت ایک مہرے سے زیادہ نہیں تم انگلی کے اشارے پر ناچتے ہو۔اربوں روپے پانی کی طرح بہا کر ٹکٹ ہولڈرز کو لالچ دیا گیا اس کے باوجود عوام کو اکٹھا نہ کر سکے۔پشاور سے لوگ لائے گئے۔کل جنہوں نے سرکس لگائی تھی چہرے جان لینا جنہوں نے عوام کے ووٹ کوپی پی پی کے پاس گروی رکھ دیا۔زرداری کو ووٹ دینے والے آپ کے ووٹ کے حقدار نہیں۔ الیکشن میں عمران دور دور تک نظر نہیں آئیں گے ابھی سازشوں میں مصروف ہیں۔اوپر اللہ تعالیٰ نیچے عوام ہیں۔ انشاء اللہ‘اللہ اور عوام کی مدد سے الیکشن میں منہ توڑ جواب دینا ہے۔انہوں نے کہاکہ نوازشریف کے کڑے احتساب سے بھی 5روپے کی کرپشن نہیں نکلی جب طوفان تھم جائے گا تو پتہ چلے گا یہ واحد لیڈر نوازشریف ہے جو صادق اور امین بھی ہے۔کبھی کبھی مخالفین کو صبر کی مار مارنی چاہئے میڈیا انڈر پریشر ہے حکمنامے جاری کئے جارہے ہیں کہ نوازشریف کی برائی کرو ورنہ تمہارا حشر بھی جیو جیسا ہو گا۔انہوں نے کہاکہ عدالتیں آزادانہ فیصلے اور میڈیا آزادانہ کوریج نہیں کرتا بولنے پرپابند ی ہے زبان بندی کردی گئی۔انھوں نے ساہیوال کے عوام سے مخاطب ہو کر کہا کہ 2013 میں آپ کا جو جذبہ تھا آج آپ نے اپنا ہی ریکارڈ‌توڑ دیا ہم آپ کی محبت کو سلام پیش کرتے ہیں. ہسپتالوں کے دورے پاگل خانوں کے دورے کی بجائے ہمت ہے تو بیماری کا علاج کراؤ۔وزیراعظم سے نکالنے کے بعد پارٹی سے بھی نکالا نوازشریف کا کتنا خوف ہے۔ انہوں نے کہاکہ جو جھک گیا بک گیا وہ اہل جوڈٹ گیا وہ نااہل۔ تین ماہ بعد الیکشن میں ایک ہی نعرہ ووٹ کو عزت دو۔ جلسہ سے صوبائی وزیر ملک ندیم کامران نے بھی خطاب کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں