ساہیوال:‌غلہ منڈی منتقل کر کے فوڈ سٹریٹ بنانے کا منصوبہ

ساہیوال(بیورورپورٹ )صوبائی وزیر پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ ملک ندیم کامران نے کہا ہے کہ حکومت اگلے مالی سال کے بجٹ میں ترقیاتی فنڈز کا 90فیصد حصہ جاری سکیموں کو مکمل کرنے کیلئے مختص کرے گی تا کہ صوبے بھر میں جاری سینکڑوں ترقیاتی سکیموں کو فوری مکمل کیا جا سکے تا کہ عوام کو ان کے ثمرات جلد مل سکیں۔انہوں نے یہ بات ڈی سی آفس میں ساہیوال کے ترقیاتی پیکیج کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی جو 15ارب روپے کی خطیر رقم سے ایشیائی ترقیاتی بنک کے تعاون سے شروع کیا جا رہا ہے۔اجلاس میں میئر ساہیوال اسد علی خان بلوچ‘ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ حبیب جیلانی وینس ‘اے ڈی سی جی احمد خاور شہزاد‘چیف آفیسر میونسپل کارپوریشن محمد زبیروٹو اور پروگرام کے سٹی مینجرمحمد رفیع کے علاوہ متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف کی خصوصی ہدایت پر صوبائی حکومت نے ساہیوال کو یہ بڑا ترقیاتی پیکیج دیا گیا ہے جس سے شہر کی تمام پرانی سیوریج لائنوں کو بہتر کیا جائے گا۔ٹیوب ویل لگائے جائیں گے ۔فتح شیر روڈکو ڈبل کیا جائے گا جبکہ غلہ منڈی کی شہر سے باہر شفٹنگ کے بعد خالی ہونے والی 5ایکڑ جگہ پر پارک اور فوڈ سٹریٹ تعمیر کی جائے گی ۔ انہوںنے پرانے اوور ہیڈ برج کے ساتھ ایک نئے پل کی تعمیر کو بھی منصوبے میں شامل کرنے اور شہر کی کمرشل مارکیٹوں کے قریب پارکنگ پلازہ تعمیر کرنے کی ہدایت کی تا کہ شہر میں ٹریفک کے نظام کو بہتر بنایا جا سکے۔ میئرساہیوال اسد علی خان بلوچ نے بتایا کہ منصوبے کے تحت شہر میں موجود 12ہزار سے زائد مویشیوں کو شہر سے باہر نکالا جائے گا جس کیلئے 200کنال پر مشتمل گوالا کالونی تعمیر کی جائیگی۔ لیڈیز پارک میں خواتین کیلئے نئے جدید جم کی تعمیر بھی منصوبے کا حصہ ہے۔چیف آفیسر محمد زبیر وٹو نے اجلاس کو بتایا کہ اس بڑے ترقیاتی پیکیج کے تحت شہر کے اندورنی و بیرونی بس اڈوں کو بھی بہتر کیا جائیگا اور تینوں ڈسپوزل ورکس پر واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ بھی لگائے جائیں گے تا کہ گندے پانی کو صاف کر کے ڈسپوز کیا جا سکے۔صوبائی وزیر نے ہدایت کی کہ اس اہم ترقیاتی منصوبے پر صنعت کاروں اور تاجروں کو بھی اعتماد میں لیا جائے اور جلد ایک سیمینار کا انعقادکر کے اہم طبقات کی آراء کو بھی سنا جائے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں