ساہیوال: لوئر باری دوآب کی ری ماڈلنگ کا منصوبہ مکمل

ساہیوال(بیورورپورٹ)کمشنر ساہیوال بابر حیات تارڑ نے کہا ہے کہ ساڑھے پانچ ارب روپے کی خطیر رقم سے لوئر باری دو آب کی ری ماڈلنگ کا منصوبہ مکمل کر لیا گیا ہے جس سے نہ صرف نہروں میں پانی کی کمی پوری ہوئی ہے بلکہ راجباہوں کی ٹیل تک نہری پانی کی دستیابی کو یقینی بنایا گیا ہے جن زمینداروں کو موگوں کی ڈیزائننگ کی وجہ سے پانی کم ملنے کی شکایات ہیں انہیں دور کرنے کیلئے خصوصی کمیٹیاں تشکیل دیدی گئی ہیں تا ہم زمینداروں کوبھی چاہیے کہ وہ قانون کو ہاتھ میں نہ لیں اور نئے تعمیر ہونے والے موگوں کو نقصان پہنچانے سے گریز کریں۔وہ یہاں محکمہ انہار کے دفتر میں زمینداروں کی شکایات دور کرنے کیلئے ہونے والے ایک خصوصی اجلا س کی صدارت کر رہے تھے جس میں ممبران اسمبلی‘کسان نمائندوں اور محکمہ آبپاشی کے افسران نے شرکت کی ۔اجلاس میں ممبران اسمبلی چوہدری محمد اشرف ‘چوہدری محمد طفیل جٹ‘پیر خضر حیات کھگہ‘ محمد ارشد ملک‘چوہدری محمد حنیف جٹ‘پیر ولائت شاہ کھگہ اور محمد نوید لودھی کے علاوہ منصوبے کے پراجیکٹ مینجر خالد حسنین قریشی ‘ایس ای محمد اسلم بھٹی‘ایکسین عباس نسیم اور اے سی ریونیو اشفاق الرحمن خان بھی موجود تھے۔انہوں نے زمینداروں کو خبردار کیا کہ نو تعمیر شدہ موگے توڑنے کی کسی کو اجازت نہیں دی جائیگی اور ملوث زمینداروں کے خلاف سخت ایکشن ہو گا۔انہوں نے موگوں کی چیکنگ کیلئے کمیٹی بنانے کا اعلان کیا جو تمام موگوں کو چیک کر کے 15ستمبر تک زمینداروں کے اعتراضات دو ر کریگی تا کہ انہیں نہری پانی دستیاب ہو سکے ۔انہوں نے محکمہ اریگیشن کو ہدایت کی کہ وہ زمینداروں کی سہولت کیلئے مویشی گھاٹ بنوائیں تاہم اس کیلئے زمین زمیندار فراہم کریں گے۔ اجلاس میں پراجیکٹ مینجر خالد حسنین قریشی نے بتایا کہ منصوبے کی تکمیل سے لوئر باری دو آب میں پانی کی گنجائش 9800کیوسک تک بڑھا دی گئی ہے او راس وقت نہرمیں 9 ہزار کیوسک سے زیادہ پانی چھوڑا جا سکتا ہے جو تمام کسانوں کی ضرورت کیلئے کافی ہے۔انہوں نے کہا کہ پراجیکٹ کی سب سے بڑی کامیابی یہ ہے کہ ٹیل کے زمینداروں کو پانی کی فراہمی یقینی بنائی گئی ہے جو سالوں سے پانی کی عدم دستیابی کا شکار تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں