18 سالہ پاکستانی نوجوان 44 پونڈ وزنی ٹیومر کا شکار

کراچی (ایس این این) آپ مانیں یا نہ مانیں لیکن 18سالہ پاکستانی محمد عیسیٰ نامی نوجوان کو ناقابل یقین حد تک 44 پونڈ وزنی ٹیومر ہے۔ جس کی وجہ سے اس کی ران اور کولہا ڈھک چکا ہے۔ بیماری کی وجہ سے اس کی دائیں ٹانگ بھی متاثر ہے جب کہ بائیں ٹانگ پر بیماری کا کوئی اثر نہیں ہوا پھر بھی وہ بستر تک محدود ہوکر رہ گیا ہے۔ مقامی حکام نے سماجی رابطے کی ویب سائیٹ پر نوجوان کی حالت جاننے کے بعد اس کی مدد کا فیصلہ کیا اور مفت سرجری کی پیشکش کردی ہے۔ جس کے لئے اسکے کئی ٹیسٹ ابھی لئے جارہے ہیں۔ اب تک کی اطلاعات کے مطابق محمد عیسیٰ پلیکسی فارمٹ نیورو فائبرو میٹوسس نامی جینیاتی بیماری میں مبتلا ہے جس کے نتیجے میں اس کے خلیوں کی نشوونما قدرتی طور پر نہیں ہوپاتی اور مرض رفتہ رفتہ انسان کو بالکل ناکارہ بنادیتاہے۔ اسکی سرجری کراچی میں ہونے والی ہے۔ اورسرجری ے بعد بھی اسے کچھ دن اسپتال میں زیر علاج رہنا پڑیگا۔ عیسیٰ کے والدین کا کہنا ہے کہ 2013ءسے انکے بیٹے کا ٹیومر بڑھنے لگا تھااور نوبت یہاں تک آگئی کہ وہ بستر تک محدود ہوکر رہ گیا۔سرجنوں کو امید ہے کہ وہ آپریشن کے بعد معمول کی زندگی گزار سکے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں