ساہیوال: پولیس اہل کاروں کا باپرد ہ خاتون پر تشدد

ساہیوال(ایس این این) میونسپل کارپوریشن سے دکان کے تنازعے پر غلہ منڈی پولیس نے دکان پر قابض خاتون کو تشدد کا نشانہ بنا ڈالا. جی ٹی روڈ ساہیوال پر پولیس اہل کاروں کی با پردہ خاتون اور اس کے بچوں کو گالیاں اور دھکے. تفصیل کے مطابق غلہ منڈی پولیس نے میونسپل کارپوریشن اور بیوہ خاتون کے مابین دکان کے تنازعے پر خاتون حفیظاں بی بی کو بھرے بازار میں تشدد کا نشانہ بنایا اور اس کو دھکے دئیے. یہ منظر سینکڑوں راہ گیروں اور گاڑیوں کے مسافروں نے دیکھا. عوام کا کہنا تھا کہ خاتون دکان پر ناجائز بھی قابض تھی تو پولیس کے مرد اہل کاروں کو اسے زدو کوب نہیں‌کرنا چاہیئے تھا. پولیس کو خواتین کے خلاف کارروائی کرنے کے لیے خاتون اہل کار کی معاونت حاصل کرنی چاہیئے. پولیس کے مطابق انھیں بلدیہ کے عملے نے بلوایا تھا کہ حفیظاں بی بی اپنے بچوں کے ہمراہ بلدیہ کے عملے کو متعلقہ دکان کا قبضہ لینے میں رکاوٹ بن رہی ہے. حفیظاں بی بی کے مطابق سٹی میئر نے میرے شوہر کی دکان کا قبضہ ملی بھگت سے سجاد نامی شخص‌کو دلوا دیا ہے. اور بلدیہ عملے نے میرا قیمتی سامان دکان سے باہر پھینک دیا جس پر میں نے اپنے بچوں کے ہمراہ خود سوزی کی کوشش کی تو پولیس نے مجھ پر تشدد شروع کر دیا اور سٹی مئیر کی آشیر باد سے ابضہ سجاد نامی شخص کو دلوانے کی کوشش کی. پولیس اہل کاروں نے خاتون کو مارنے کے ساتھ اسے گندی گالیاں بھی دیں. عوام نے پولیس اہل کاروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے.
ویڈیو دیکھیں:

اپنا تبصرہ بھیجیں