حجرہ شاہ مقیم، گندے پانی سے گزرتے جنازے کی تصویر کا نوٹس

اسلا م آباد(ایس این این) سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ثاقب نثار نے گٹر کے گندے پانی سے بھری گلی سے گزرتے جنازے کی سوشل میڈیا پر وائرل تصویر کا نوٹس لے لیا۔چیف جسٹس نے ایک کیس کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل اور ایڈووکیٹ جنرل کی توجہ تصویر کی طرف دلائی۔چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ لوگ جنازہ پڑھنے جا رہے ہیں اور ناپاک ہو گئے ۔ یہ غلاظت گندگی انسانی صحت اور پاکیزگی کے لئے خطرہ ہے۔انہوں نے اٹارنی جنرل اور ایڈوکیٹ جنرل اور میڈیا سے استفسار کیا کہ یہ تصویر کس شہر کی ہے۔جس علاقے کی تصویر ہوئی اس علاقے کے رکن قومی اسمبلی اورکونسلر سب سے سوال کریں گے۔ ان سے سخت باز پرس کی جائے گی۔ذرائع کے مطابق یہ تصویر حجرہ شاہ مقیم(اوکاڑہ) کے علاقے زاہد پورہ کی ہے. یہ تصویر اس وقت بنائی گئی جب وارڈ نمبر 187 حجرہ شاہ مقیم کے رہائشی اور محکمہ زراعت کے ملازم محمد علی کی بہن ہمشیرہ زیب الٰہی فوت ہوئی تو لوگ اس گندے پانی سے گزرے. یہ تصویر دو دن سے سوشل میڈیا پر گردش کر رہی تھی. اس علاقے سے علی رضا گیلانی نے صوبائی نشست جیتی تھی. علی رضا گیلانی اس وقت صوبائی کابینہ میں ہائر ایجوکیشن کی وزارت پر متمکن ہیں. ان کی جانب سے یہاں سولنگ بھی لگایا گیا تھا مگر سیوریج کے نظام پر عوام کی طرف سے بارہا شکایات کے باوجود توجہ نہیں دی گئی. اب سپریم کورٹ نے اس تصویر پر ازخود نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ حکام کو عدالت طلب کر لیاہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں