اسمبلیوں کی مدت 4 سال ہونی چاہیے: خورشید شاہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک) اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا ہے ہم میں برداشت نہیں ہے، لمبا عرصہ حکومت کو برداشت نہیں کر سکتے، جو 2014 میں ہوا تھا وہ دوبارہ بھی ہوسکتا ہے۔تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا ہے اسمبلیوں کی مدت 4 سال ہونی چاہیئے، 2014 میں بھی اسمبلیوں کی مدت 4 سال مقرر کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا ہم میں برداشت نہیں ہے، لمبا عرصہ حکومت کو برداشت نہیں کرسکتے۔ آج بھی کہتا ہوں کہ آئینی اصلاحات میں اسمبلیوں کی مدت 4 سال کی جائے۔ خورشید شاہ کا کہنا ہے نواشریف اور اسحاق ڈار نے مجھ سے اتفاق کیا تھا کہ آئندہ اسمبلیوں کی مدت کم ہوننی چاہئے۔ انہوں نے کہا ملک اور اداروں کے لئے بھی بہتر ہوگا کہ اسمبلیوں کی مدت 4 سال ہوجائے۔ جو 2014 میں ہوا تھا وہ دوبارہ بھی ہوسکتا ہے.اس لئے بہتر ہے اقدامات کئے جائیں۔خورشید شاہ کا مذید کہنا تھاحکومت اسمبلیوں کی مدت 4 سال مقرر کرے تو ساتھ دیں گے۔ اپوزیشن لیڈر نے مردم شماری رپورٹ پر بھی اعتراض کر دیا کہتے ہیں مردم شماری کے عمل میں صرف جان چھڑائی گئی ہے۔ شماریات ڈویژن اور فوج کے ریکارڈ کا موازنہ کیا جائے۔ دونوں اداروں کے ریکارڈ کا موازنہ کرنے سے اصل حقائق سامنے آئیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں