سول ہسپتال کالونی کے نوجوان پر گارڈز کا تشدد

ساہیوال( ایس این این) ڈسٹرکٹ ہسپتال کے گارڈز کی ہسپتال کالونی کے رہائشی نوجوان کی پھینٹی، نوجوان کا گارڈز پر جوابی حملہ، ڈسٹرکٹ ہسپتال میدان جنگ بن گیا۔کالونی کے رہائشیوں سے بدتمیزی اور جھگڑا گارڈز کا معمول بنا گیا۔ پیسفک نامی سیکیورٹی ایجنسی کے اہل کار حفاظتی ڈیوٹی کی بجائے سائیکل سٹینڈ کے ٹھیکیدار کے اشاروں پر ناچنے لگے۔ تفصیلات کے مطابق آج سول ہسپتال کی رہائشی کالونی کے محمد رفیع کا بیٹا حسب معمول اپنی موٹر سائیکل پر گھر جانے کے لیے داخلی گیٹ پر پہنچا تو گارڈز اور سائیکل سٹینڈ کے عملے نے اسے روک لیا۔ باز پرس پر اس نے بتایا کہ وہ کالونی کا رہائشی ہے مگر جواباً سائیکل سٹینڈ کے ٹھیکدار کے ایما ء پر گارڈز نے اسے گالیاں دیں اور زدوکوب کیا۔ محمد رفیع کا بیٹا چند لمحوں بعد اپنے ساتھیوں کے ساتھ واپس آیا اور مذکورہ گارڈ کو ڈنڈوں سے تشدد کا نشانہ بنایا۔ مریض اور ان کے لواحقین اس منظر سے خوفزدہ ہوگئے۔ کالونی کے رہائشیوں کے مطابق گارڈز سیکیورٹی کی بجائے سائیکل سٹینڈ کے ٹھیکیدار کی شہ پر سائیکل سٹینڈ کی ڈیوٹی کر رہے ہیں، رہائشیوں کو سائیکل سٹینڈ کی وجہ سے پریشان کیا جاتا ہے اور سائیکل سٹینڈ عملے اور ٹھیکیداروں کی بدتمیزی روزمرہ معمول بن چکی ہے۔ سیکیورٹی گارڈز مٹھی گرم کرنے پر ملاقاتیوں کو ممنوعہ اوقات میں بھی وارڈز میں جانے کی اجازت دے دیتے ہیں جب کہ گارڈز اور سائیکل سٹینڈ عملے کی ملی بھگت سے کئی افراد وارڈز کے قریب موٹر سائیکلز کھڑی کرتے ہیں ۔انھوں نے ارباب اختیار سے معاملہ سلجھانے کی استدعا کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں