انگریزی کو قومی زبان بنانے کی قرار داد کی مذمت

ساہیوال (بیورورپورٹ) پاکستان قومی زبان تحریک ساہیوال کے ضلعی صدر پروفیسر ریاض حسین زیدی‘ سیکرٹری جنرل نوید خالد جوئیہ اور سیکرٹری اطلاعات فاروق اظہر نے اپنے مشترکہ بیان میں ماروی میمن کی طرف سے سینٹ میں پیش کئے جانیوالے سیاہ بل کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ پیش کیا جانیوالا مذکورہ بل پاکستان کی ترقی‘یکجہتی اور خوشحالی کے خلاف ہے۔ایک ملاقات میں انہوں نے کہاکہ ماروی میمن کے سیاہ بل کے خلاف پاکستان قومی زبان تحریک آج پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاجی مظاہرہ کرے گی۔ انگریزی کو سرکاری زبان بنانے‘ اردو کو مادری زبانوں کے خانے میں ڈالنے اور پاکستان کی 8قومی زبانیں بناکر پاکستان کی وحدت کو پار ہ پارہ کرنے والی ماروی میمن کے رسوائے زمانہ بل کو سینٹ میں پیش کرنے کے خلاف پاکستان قومی زبان تحریک بھرپور احتجاج کرے گی کیونکہ پاکستان کاآئین پہلے ہی تمام علاقائی زبانوں کو تحفظ فراہم کرتاہے۔ انہوں نے کہااگر یہ بل منظور ہوگیا تو ملک میں خون کی ندیاں بہنے کاخدشہ ہے۔ سانحہ مشرقی پاکستان کے بعد ملک دشمن عناصر قوم پرستوں کے ہاتھوں یہ ملک توڑنے کی دوسری بڑی کوشش ہوگی اور ملک کی وحدت کو پارہ پارہ ہونے سے بچانے کے لئے ہرشہری کو اپنا کردار اداکرناہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں