لینڈ ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ ہونے سے عوام کو فائدہ ہوا: کمشنر

ساہیوال (بیورورپورٹ) کمشنر ساہیوال ڈویژن علی بہادر قاضی نے کہا ہے کہ پنجاب میں لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن سے عام آدمی کو فراڈ اور بد عنوانی سے تحفظ ملا ہے تاہم ان سنٹرز کی کارکردگی مزید بہتر بنانے کی ضرورت ہے تاکہ عوام کو در پیش مشکلات کم ہو سکیں۔انہوں نے یہ بات اپنے دفتر میں ڈویژن کی تمام تحصیلوں کے اسسٹنٹ کمشنرز کو لینڈ ریکارڈ سنٹرز کی چیکنگ اور مانیٹرنگ کرنے پر صوبائی حکومت کی طرف سے دیئے گئے اعزازیہ کی تقسیم کے موقع پر کہی۔تحصیل پاکپتن کے اسسٹنٹ کمشنر اشفاق الرحمن‘اسسٹنٹ کمشنر کنول نظام بھٹو‘تحصیل چیچہ وطنی کے عامر نذیر کھچی‘تحصیل اوکاڑہ کی مس ماہم آصف ملک اور تحصیل عارف والا کے عدنان فرید کو ایک ایک لاکھ روپے جبکہ تحصیل رینالہ خورد کے اسسٹنٹ کمشنر عابد حسین بھٹی اور تحصیل دیپالپور کے شکیل خان کو 50‘50ہزار اعزازیہ دیا گیا۔کمشنر نے اسسٹنٹ کمشنر ز پر زور دیا کہ وہ ان مراکز کا مسلسل معائنہ کریں اوروہاں در پیش سہولیات کو مزید بہتر بنائیں تا کہ اس سسٹم کا براہ راست فائدہ عوام کو مل سکے۔انہوں نے کہا کہ حکومت مرحلہ وار اہم قصبات میں سٹیلائٹ سنٹر بھی قائم کر رہی ہے تا کہ تحصیل سنٹرز پر بوجھ کم ہو اور سروس ڈیلوری میں بہتری آئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں