ساہیوال: ٹھیکیدار عمران حمید کے قاتل کو 8 بار سزائے موت

ساہیوال(ایس این این) سرکاری ٹھیکیدار کو اغوا کر کے قتل کرنے والے مجرم کو انسداد دہشت گردی عدالت نے موت کی سزا سنا دی۔ قاتل کی تمام جائیداد ضبط کرنے کے علاوہ 44 سال کی قید سخت کا بھی حکم۔ تفصیلات کے مطابق آج یہاں انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج ملک شبیر اعوان نے ہائی سیکورٹی جیل ساہیوال کے ٹھیکیدار عمران حمید کے اغوا برائے تاوان اور قتل کے مقدمے کی سماعت کرتے ہوئے ملزم جعفر کو جرم وار قرار دیتے ہوئے 8 بار سزائے موت ، 44 سال قید سخت اور تمام جائیداد ضبط کرنے کا فیصلہ سنایا۔ جہاز گراؤنڈ ساہیوال سے تعق رکھنے والے جواں سال سرکاری ٹھیکیدار عمران حمید کو دسمبر 2015 میں گھر واپسی کے دوران جعفر سمیت تین افراد اعجاز اور رمضان نے اغوا کیا تھا اور والدین سے 50 لاکھ روپے تاوان طلب کیا تھا۔15 لاکھ روپے کی ادائیگی کے بعد مذکورہ ملزمان نے عمران حمید کو قتل کر دیا اور عارف والا روڈ کے نواحی گاؤں میں گڑھا کھود کر دفن کر دیا تھا۔پولیس نے سرچ آپریشن کے دوران جنوری 2016 میں لاش برآمد کر لی اور ملزم اعجاز اور رمضان پولیس مقابلے میں مارے گئے۔ مارے جانے والے ملزمان سے مقتول کی انگوٹھی برآمد ہوئی تھی جب کہ ملزم جعفر موقع سے فرار ہو گیا تھا۔بعد ازاں جعفر کو گرفتار کر کے انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔شواہد اور اعتراف جرم کے بعد انسداد دہشت گردی کی عدالت نے آج جعفر کو قتل اور دہشت گردی کی دفعات کے تحت 8 بارسزائے موت ، جائیداد کی ضبطی اور 44 سال قید سخت کی سزا ئئیں سنائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں