حکمران ملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہے ہیں: طیب رسول

ساہیوال(ایس این این) جماعت اسلامی ضلع ساہیوال کے راہنما چوہدری طیب رسول نے کہاہے کہ میڈیا کی رپورٹس کے مطابق پنجاب بھر میں 46ہزار سے زائد سکول ہیں مگر ان کی حالت انتہائی ناگفتہ بہ اور خستہ ہے۔صوبے میں ابتدائی تعلیم کے لئے ایک لاکھ83ہزار221اور پرائمری سطح پر1لاکھ5ہزار701اساتذہ موجودہونے کے باوجود شرح خواندگی 61فیصد سے نہیں بڑھی۔تعلیم حکمرانوں کی تر جیحات میں شامل نہیں ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک پریس ریلزمیں کیا۔انہوں نے کہاکہ منی لانڈرنگ میں ملوث تمام افراد کو پاکستان کے مروجہ قانون کے مطابق سخت ترین سزائیں دی جائیں اور اس حوالے سے کسی بھی قسم کادباؤ قبول نہ کیاجائے۔جو قومیں قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتی ہیں وہ کبھی بے توقیری کی زندگی نہیں گزارتیں۔یہ ہمارالمیہ ہے کہ پاکستان میں ظالم اور کرپٹ افراد کوعہدوں اور مراعات سے نوازاجاتا ہے اور اہل افراد کو کوئی اہمیت نہیں دی جاتی۔ملک میں اقرباپروری اور رشوت خوری کاکلچر عام ہے۔کرپشن اور کرپٹ عناصر کاقلع قمع ناگزیر ہوچکا ہے۔انہوں نے کہاکہ قومی خزانے کو لوٹنے اور ٹیکس چوری کرنے والے بڑے قومی مجرم ہیں انہیں جلد ازجلد کیفر کردار تک پہنچایاجانا چاہئے۔کرپٹ اور بدعنوان لوگوں نے ملکی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے۔ضرورت ا س امر کی ہے کہ ملک میں قانون کی بالادستی کویقینی بنایاجائے۔چوہدری طیب رسول نے مزیدکہاکہ 70برسوں سے کرپٹ اور نااہل حکمران ملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہے ہیں۔پاکستان کواس وقت پڑھی لکھی،دیانتدار اور کرپشن سے پاک محب وطن قیادت کی اشد ضرورت ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں