مئیر ساہیوال اور ڈی پی او میں ٹھن گئی

ساہیوال(بیورورپورٹ)میونسپل کارپوریشن اور محکمہ پولیس کے درمیان ٹھن گئی‘کارپوریشن کے اجلاس میں ناروا رویہ کیخلاف ڈی پی او کو تبدیل کرنے کی قرارداد متفقہ طور پر منظور‘ریسکیو 15والی جگہ فوری واپس کرنے کامطالبہ۔تفصیلات کے مطابق میونسپل کارپوریشن کا ہنگامی اجلاس زیر صدارت ڈپٹی میئر وکنوینئر چوہدری ساجد نعیم ہیپی منعقد ہوا جس میں میاں نوید مشتاق فرشتہ ایڈووکیٹ نے ہاؤس کی طرف سے مشترکہ قرارداد پیش کی جس میں کہا گیا کہ ریسکیو 15کا دفتر صدر چوک سے ختم ہو گیا تھا اب کارپوریشن مذکورہ جگہ واپس لینا چاہتی تھی جس کیلئے ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ کمیٹی کو بتلا یا گیا اور بنائی گئی کمیٹی نے ابھی فیصلہ نہیں کیا تھا کہ محکمہ پولیس نے مذکورہ عمارت گرانا شروع کردی اورکارپوریشن عملہ کو دھمکیاں دیں۔ بعدازاں ڈی پی او ڈاکٹر عاطف اکرام کا میئر ساہیوال اسد علی خان بلوچ سے ٹیلیفون پرنامناسب رویہ تھا۔اجلاس میں مشترکہ قرارداد مذمت پیش کی گئی جو ہاؤس نے منظور کرکے قرارداد کی کاپیاں وزیراعلیٰ پنجاب‘ چیف سیکرٹری‘ آئی جی پولیس پنجاب‘وزیر بلدیات اورمقامی ممبران اسمبلی کو بھجوانے کی منظوری دی۔اجلاس میں میئر ساہیوال اسد علی خان‘ حاجی عبداللطیف‘ اسامہ بخاری‘ملک یونس گوگا‘ ملک فاروق‘ عمران بلوچ‘مسعود خان مہمند‘اسد مسیح اور فرزانہ عباس کمبوہ نے قرارد اد پر بحث کی۔ اجلاس کے بعد میئر ساہیوال اسدعلی خان بلوچ اور ڈی ایس پی سٹی شکیل کھوکھر کے درمیان کارپوریشن دفترمیں مذاکرات بھی ہوئے تاہم ابھی تک معاملات حل نہ ہوئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں