مساجد نے معاشرے میں اخلاقی اقدار کی پاسداری کی: پیر منظور شاہ

ساہیوال (بیورورپورٹ) ممتاز عالم دین علامہ پیر ابوالنصر منظور احمد شاہ نے کہاہے کہ معاشرہ میں اخلاقی اقدارکی پاسداری اور اسلامی اصولوں کی بالادستی مساجد کی مرہون منت ہے جب تک معاشرہ میں ان کی ضرورت و اہمیت کو محسوس کیاجاتا رہا اسلام سر بلند رہا مگر جونہی مساجد کی مرکزی حیثیت متزلزل ہوئی تو ملت اسلامیہ اپنی اقدار کھو کر تباہی اور تنزلی کا شکار ہو گئی۔وہ یہاں بائی پاس لاہور ملتان روڈ ساہیوال پر جامع مسجد المنظورکے سنگ بنیاد رکھنے کے موقع پرایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر جامعہ فریدیہ کے نائب مہتمم و شیخ الحدیث ڈاکٹر مفتی محمد مظہر فرید شاہ‘حاجی شیخ محمد سلیم فریدی‘ چوہدری محمد سلطان‘ میاں محمد عامر‘حاجی احسان الحق فریدی‘ شیخ محمد یوسف فریدی اور عبدالغفور فریدی کے علاوہ دیگر شخصیات بھی موجود تھیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک حقیقت ہے جس سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ اسلامی معاشرہ کی تشکیل و تعمیر کا تمام تر دارو مدار مساجد پر ہی ہے اور قرآن مقدس میں فرمان باری تعالیٰ ہے کہ مساجد کو وہی لوگ آباد کرتے ہیں جو اللہ اور یوم آخرت پر ایمان رکھتے ہیں۔ مسجد کے معاملات میں دلچسپی اور انکی نگہبانی کرنا ایمان کی علامت ہے کیونکہ رسول اللہ ﷺ کا فرمان ہے کہ جب تم کسی آدمی سے متعلق جانو کہ مسجد کی نگہبانی کرتا ہے تو اس کے ایمان کی گواہی دو۔ انہوں نے مسجد کی فضیلت اور اہمیت پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ دنیا میں تین مساجد سب سے زیادہ فضیلت کی حامل ہیں۔ مسجد الحرام‘ مسجد نبوی اور مسجد اقصیٰ (بیت المقدس)ان کے علاوہ مدینہ کی سرزمین پرقائم مسجد قباء کی فضیلت حدیث پاک میں اس طرح ملتی ہے کہ فرمان نبی اکرم ہے کہ جو بندہ گھرسے وضو کر کے وہاں دو نفل ادا کرے تو اس کیلئے عمرے کاثواب لکھ دیا جاتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں