ساہیوال: 2012 کےمستقل ہونے والے اساتذہ تنخواہوں سے محروم

ساہیوال(ایس این این) محکمہ تعلیم میں مستقل ہونے والے اساتذہ چینج فارم جمع نہ کروانے پر تنخواہوں سے محروم، مستقل ہونے والے اساتذہ کی سوشل سیکیورٹی فنڈ کٹوتی کے بعد بھی انھیں بقایا جات نہیں دئیے جا رہے۔ اے جی آفس ساہیوال کا کلرک مہر حسن خواتین اساتذہ سے رشوت کا مطالبہ کرنے لگا۔ ذرائع کے مطابق 2012 میں کنٹریکٹ کی بنیادوں پر بھرتی ہونے والے ایجوکیٹر ز کو 2017میں مستقل کر دیا گیا تھا تاہم کئی اساتذہ نے مستقل تقرری کا چینج فارم جمع نہ کروایا جس پر اے جی آفس نے ان کی تنخواہیں روک دیں۔ چینج فارم جمع کروانے پر عارضی مدت کے دوران ملنے والے سوشل سیکیورٹی فنڈز واپس جمع کروانے کی ہدایت کی گئی ۔ سوشل سیکیورٹی فنڈ واپس جمع کروانے کے باوجود کئی اساتذہ کو تنخواہیں ادا نہیں کی گئی ۔محکمہ تعلیم کے کلرک جہانگیر اور اے جی آفس کے مہر حسن کی ملی بھگت سے خواتین اور مرد اساتذہ کی تنخواہیں اور بقایا جات ادا نہیں کیے گئے۔ بقایا جات کی ادائیگی کے لیے مہر حسن کی جانب سے رشوت کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔ اساتذہ نے ڈی سی ساہیوال سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں