ساہیوال: اندھے قتل کا مرکزی ملزم گرفتار

ساہیوال (بیورورپورٹ )تھانہ فرید ٹائون پولیس نے اندھے قتل کو ٹریس کرکے مرکزی ملزم گرفتارکرلیا ‘ مقتول پیر ملزم کی بیٹی سے زبردستی زیادتی کی کوشش میں تھا ‘پولیس دیگر ملزمان کی گرفتاری کیلئے چھاپے مار رہی ہے ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز 87/6-Rکے کھیتوں سے نامعلوم ملزم کی بوری بند نعش ملی ۔ ڈی ایس پی سٹی شکیل احمد کھوکھر اور ایس ایچ او فرید ٹائون ذیشان ڈوگر اطلاع ملنے پرموقع پر پہنچے اور خون کے نشانات کے ذریعے شادمان ٹائون میں ایک گھر پہنچے جو رمضان نامی شخص کا تھا اور مکان پر تالا لگا ہوا تھا ۔ڈی پی او عاطف اکرام نے ملزمان کی گرفتاری کیلئے ڈی ایس پی سٹی کی سربراہی میں ٹیم تشکیل دی اور جدید سائنسی طریقہ تفتیش کے ذریعے اصل ملزم نوشیر کو ٹریس کرکے گرفتار کرلیا جس نے ابتدائی تفتیش میں طفیل اور بابر کے ہمراہ قتل کا اعتراف کرلیا ۔ڈی پی او عاطف اکرام کے مطابق ملزم نے بتایا ہے کہ مقتول منور شاہ اس کا پیر تھا جو اوکاڑہ کا رہائشی ہے اور وہ میری 15/16سالہ بیٹی پر بری نظر رکھتا تھا ۔مقتول پیر شام کے وقت میرے گھر آیا اور وہ نشہ میں دھت تھا جبکہ وہ چائے وغیرہ کا سامان لینے دکان پر گیا اور اسی دوران میرا ماموں طفیل اورمیرا قریبی رشتہ دار بابر علی میرے ساتھ مل گئے جب وہ گھر آئے تو مقتول پیر میری بیٹی کے ساتھ زبردستی کی کوشش کر رہا تھا اور میری بیٹی عزت بچانے کیلئے سیڑھیاں چڑھنے کیلئے بھاگ رہی تھی تو ہم تینوںنے مقتول کو دھکا دے دیا اور ڈنڈے مار کر اور پسٹل سے سرپر فائر کرکے قتل کردیا اور نعش کو بوری میں بند کر کھیتوں میں پھینک دیا ۔ ڈی پی او ساہیوال نے پولیس افسرا ن کو شاندار کارکردگی پر نقدی انعامات اورتعریفی سرٹیفکیٹ دینے کا اعلان کیا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں