شریف خاندان کی کرپشن عوام پر کھل چکی ہے: عمران خان

اسلام آباد: پی ٹی آئی کے چئیرمین عمران خان نے یہاں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہےکہ پاناماکیس میں یہ حقیقت سامنے آ‌چکی ہے کہ شریف خاندان 16 کمپنیوں کا مالک ہے۔بلیک منی وائٹ ہوکر پاکستان واپس آتی رہی ہے۔1999میں ان کی دولت میں جس قدر تیزی سے اضافہ ہوااور ہل میٹل سے متعلق نئے انکشافات ہوئے ہیں وہ شریف خاندان کی بدعنوانی کا منہ بولتا ثبوت ہیں.
عمران خان نےبتایاکہ ہل میٹل کمپنی نے114 کروڑ روپے نواز شریف کو بھیجے۔80کروڑ روپے مریم نواز کو دیے گئےاورڈرائیور کوبھی 18 کروڑ روپے بھیجے گئے۔عمران خان نے کہاکہ نواز شریف نے اپنے ملازمین کو24 کروڑ روپے بھیجے ۔پولیس سےبھی منی لانڈرنگ میں تعاون لیا گیا اورپنجاب پولیس کے 2 کانسٹیلز کےذریعے پیسےبھیجےگئے۔کانسٹیبل ندیم سرور کو بھی پیسے گئے۔انھوں نے بتایاکہ یہ پیسہ ڈرائیور یا ملازم نہیں،ان کی جیبوں میں گیا۔ عمران خان نے دعوی کیاکہ یہ صرف ایک کمپنی کی تفصیلات ہیں، ان کی سولہ کمپنیاں ہیں۔نواز شریف کی ٹرانزیکشن کی تفصیلات ہمارے پاس ہیں۔ساری تفصیلات نیب کو فراہم کریں گے۔
وزیردفاع سے متعلق عمران خان نے کہاکہ خواجہ آصف جیسے لوگوں کی وجہ سے پارلیمنٹ کاتقدس پامال ہوا۔ ملک کا وزیر خارجہ دبئی میں کمپنی کیلئے کام کررہا ہے۔خواجہ آصف ایک دن کی 16 لاکھ روپے تنخواہ لے رہا ہے۔خواجہ آصف کس منہ سے پاکستان کی نمائندگی کررہے ہیں،کیا ہندوستان کا وزیر خارجہ دبئی میں نوکری کی مجال کرسکتا ہے؟انھوں نے مزید دعوی کیاکہ خواجہ آصف کےبینک اکاؤنٹ سے پیسہ امریکا جارہا ہے۔یہ امریکا جاکر امریکا کی زبان بولنے لگتے ہیں۔خواجہ آصف پاکستان کیلئے سیکیورٹی رسک ہے۔ انھوں نے سوال کیاکہ کیاشاہد خاقان کو نہیں پتہ کہ خواجہ آصف دبئی میں ملازم ہے۔عمران خان کاکہناتھاکہ اس پارلیمنٹ نے ایک چور کو پارٹی صدر بنانے کی اجازت دی۔پارلیمنٹ کو تباہ کرنے والے پارلیمنٹیرینزہیں۔شہباز شریف کو طلب کر کے نیب نے زبردست کام کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں