یوسف رضا گیلانی کے بیٹے اور پی ٹی آئی کارکنوں‌میں تصادم

اوکاڑہ: اوکاڑہ میں جلسہ کے بعد لاہور جاتے ہوئے عمران خان کے قافلے کی سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی کے صاحبزادے کے گارڈز سے جھڑپ،موسیٰ گیلانی نے اپنے گارڈز کے ذریعے ہمارے قافلے پر فائرنگ کی. عمران خان کے قافلے کے شرکا کا الزام. ہماری طرف سے کوئی فائرنگ نہیں کی گئی، پی ٹی آئی سستی شہرت حاصل کرنے کے لیے الزام لگا رہی ہے. موسیٰ گیلانی نے پی ٹی آئی کے الزامات رد کر دئیے. تفصیلات کے مطابق اوکاڑہ سے جلسہ کے بعد لاہور واپس جاتے ہوئے عمران خان کے قافلے پر موسیٰ گیلانی کی جاب سے حملے کی اطلاعات موصو ل ہوئی ہیں. ذرائع کے مطابق موسیٰ گیلانی کی گاڑی نے عمران خان کے قافلے کو کراس کرنا چاہا لیکن قافلے کی آخری گاڑی جس میں فیصل جاوید موجود تھے، موسیٰ گیلانی کی گاڑی کو رستا نہ دیا جس پر موسیٰ گیلانی کے گارڈز نے گاڑی کے ڈرائیور کو راستا دینے پر اصرار کیا اور تو تکار کے بعد بات فائرنگ تک جا پہنچی.سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے موسیٰ گیلانی AFF-148 نمبر کی لینڈ کروزر میں سوار تھے.علی موسیٰ گیلانی کے ساتھ دوسری لینڈ کروزر کا نمبر BD-7098 تھا،فائرنگ کرنے والے گارڈز MNC-1111 نمبر کی گاڑی (ڈالہ) میں سوار تھے. پی ٹی آئی نے موسیٰ گیلانی پر غنڈہ گردی کا الزام عائد کیا ہے. جب کہ موسیٰ گیلانی نے رات ساڑھے بارہ بجے پریس کانفرنس کا اعلان کیا ہے جس میں وہ حقائق منظر عام پر لائیں گے کہ حملہ کیوں اور کس جانب سے کیا گیا .تا ہم موسیٰ گیلانی کے مطابق پتوکی کے قریب پانچ تیز رفتار گاڑیوں نے ان کی گاڑی کو اوور ٹیک کیا اوران میں سے آخری گاڑی نے ان کی گاڑی کو ٹکرماری جس سےگاڑی کو نقصان بھی پہنچا۔انہوں نے کہا کہ گاڑی کو ٹکر مارنے والوں نے میرے گارڈز کےساتھ تلخ کلامی کی جبکہ انہوں نے تحریک انصاف کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ہماری طرف سے کوئی فائرنگ نہیں کی گئی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ واقعے کی اطلاع 15 کو دی تو پتا چلا کہ عمران خان کا قافلہ جارہا تھا۔تحریک انصاف نے مطالبہ کیا ہے کہ علی موسیٰ گیلانی کے خلاف مقدمے درج کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں