اگر نااہل ہوتا تب بھی شریف مافیا کا پیچھا نہ چھوڑتا:‌عمران خان

ٹنڈو محمد خان: تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ سے اگر نااہل ہوتا تو بھی شریف مافیا اور کرپٹ وزیروں کا پیچھا نہ چھوڑتا ،سندھ میں جنگل اور جس کی لاٹھی اس کی بھنس کا قانون ہے ۔ٹنڈو محمد خان میں عوامی جلسے سے خطاب میں عمران خان نے کہا کہ زرداری ایک اور شوگر مل لگانا چاہتے ہیں ، اسی لئے ساری شوگر ملیں بند ہیں،جب تک پی ٹی آئی کی حکومت نہیں آتی کسانوں کو گنے کی قیمت نہیں ملے گی ۔ان کا کہناتھاکہ جب وزیراعلیٰ اور وزیر غیر قانونی کام کراتے ہیں تو پولیس خود بھی قانون توڑتی ہے، سندھ کے 14ہزار پولیس اہلکاروں پر کرپشن پر قانونی شکنی کے مقدمات ہیں ، آئی جی نے خود کہا کہ ان کے نیچے موجود افسروں کی تقرریاں پیسے لے کر کی گئیں۔
پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ حکمران ادارے تباہ کرتے ہیں وہ کبھی انہیں ٹھیک نہیں کرسکتے ،جب خیبرپختونخوا میں ہماری حکومت آئی ،ہم نے پولیس اور اسپتال ٹھیک کئے ، وہاں 3ہزار ڈاکٹر تھے آج 9ہزار ہیں۔عمران خان نے یہ بھی کہا کہ ہم نے کرپشن پر ایک کو ’ کیوں نکالا‘ کردیا ،مگر اب بھی کچھ بڑے مگر مچھ باہر گھوم رہے ہیں،نااہل ہوجاتا تب بھی شریف مافیا کا پیچھا نہ چھوڑتا ۔
انہوں نےکہا کہ حدیبیہ کیس میں تکنیکی گراؤنڈ پر شریف خاندان کو بچایا گیا ،نیب کی ذمہ داری تھی کہ کیس صحیح سے پیش کرتی ، چلو اچھا ہوا شہبازشریف نااہل نہیں ہوا ، مجھے کمزور ٹیموں سے کھیلنے میں مزہ نہیں آتا ۔عمران خان نے کہا کہ جب آپ کے وزیر،وزیراعلیٰ، وزیراعظم کرپشن کرتےہیں تو سارا معاشرہ تباہ کردیتے ہیں، اس بات شہبازشریف اپنے امپائر کھڑے کرکے بھی پنجاب میں نہیں جیت سکتا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں