زاہد حامد کا استعفیٰ : ساہیوال میں پہیہ جام ہڑتال نہ ہو سکی

ساہیوال(بیورورپورٹ) وفاقی وزیر قانون زاہد حامد کے استعفیٰ کے بعد تحریک لبیک یارسول اللہ ؐ کی کال پر ساہیوال میں پہیہ جام ہڑتال نہ ہوسکی۔ ختم نبوت کے حلف نامہ میں چھیڑ چھاڑ کے حوالے سے کارکنوں نے فیض آباد میں دھرنادے رکھا تھااور وفاقی وزیر قانون زاہد حامدکے استعفیٰ کامطالبہ کیا تھا۔ حکومت کی جانب سے لاٹھی چارج‘ آنسو گیس کی طاقت کا استعمال کرکے دھرنا منتشر کرانے کی ناکام کوشش کی گئی۔ دو دن کیلئے سرکاری و نجی سکولز کو بند رکھنے کا سرکاری اعلان بھی کیاگیا۔ ملک بھر میں ہڑتالوں و دھرنوں کے باعث صورتحال خراب ہونے کے بعد وفاقی وزیر قانون زاہد حامد نے مستعفی ہونے کا اعلان کردیا جس کے بعد ساہیوال اور گردونواح میں پہیہ جام ہڑتال نہ ہوئی تاہم موبائل فون ایسوسی ایشن اور وان بازار کے تاجروں نے اپنی دوکانیں بند رکھیں۔ ساہیوال کے تاجرشیخ محمد ابوبکر نے کہاہے کہ ختم نبوت ؐ پر اپنی جان تک قربان کرنے سے دریغ نہیں کرینگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں