دھرنا ختم کرنے کا باضابطہ اعلان، علامہ خادم رضوی میڈیا پر برس پڑے

اسلام آباد: تحریک لبیک یارسول ﷺ اللہ نے باقاعدہ اعلان کے ذریعے فیض آباد میں جاری دھرنا ختم کرنے کا اعلان کیا ہے. ذرائع کے مطابق علامہ خادم حسین رضوی نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے ہمارے مطالبات مان لیے ہیں اس بنا پر اب دھرنا اٹھا لیا جائے اور دیگر شہروں میں احتجاج کرنے والے بھی پرامن طور پر منتشر ہو کر اپنے گھروں کو واپس چلے جائیں. میڈیا رپورٹس کے مطابق علامہ خادم حیسن رضوی کے اعلان کے دوران جب ایک شخص نے ان کے کان میں کہا کہ ہماری پریس کانفرنس لائیو نہیں ہے جس پر خادم رضوی دھرنے کی کوریج میں مصروف صحافیوں پر برہم ہو گئے اور کہا کہ جب تک ہماری پریس کانفرنس لائیو نہیں جاتی اس وقت تککوئی صحافی یہاں سے نہیں جائے گا. ایک صحافی نے علامہ خادم رضؤی کو بتایا کہ پیمرا قوانین کے تحت لائیو پریس کانفرنس دکھانے پر پابندی ہے تو خادم رضوی نے اس صحافی کو کہا کہ پھر یہاں کیا لینے آئے ہو؟ بعد ازاں رینجرز کے افسران نے علامہ خادم رضوی کو فیض آباد کا چارج سنبھالنے کی بابت بتایا تو مولنا خادم رضوی نے کارکنوں کو پرامن طور پر منتشر ہونے کی ہدایت کی. ملک کے دیگر حصوں میں جاری دھرنے بھی مرکزی دھرنے کے بعد ختم کر دئیے گئے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں