ساہیوال میں تحریک لبیک کے کارکنوں کا دوسرے روز بھی مظاہرہ

ساہیوال (بیورورپورٹ)تحریک لبیک یارسول اللہ کے سینکڑوں کارکنوں نے ساہیوال پریس کلب کے باہر شدید احتجاج کیا اور ختم نبوت کے حوالہ سے فیض آباد میں دھرنا کے شرکاء کے خلاف حکومتی آپریشن کی شدید مذمت کی۔ پریس کلب کے باہر کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے قائدین مفتی امام بخش ندیم‘لیاقت امین مصطفائی‘احمد منیب‘ تاجر و سول سوسائٹی راہنما شیخ اعجاز رضا اورپی ٹی آئی راہنما فیصل جلال ڈھکو نے خطاب کرتے ہوئے فیض آباد دھرنا میں شریک افراد کو سلام اورشہداء کو خراج عقیدت پیش کی۔ مقررین نے کہاکہ ختم نبوت کے حوالہ سے قانون میں چھیڑ چھاڑ کرنے والوں کو پہلے سزاد ینے اور وفاقی و صوبائی وزرائے قانون زاہد حامد اور رانا ثنا ء اللہ کو برطرف کرنے کامطالبہ تھا لیکن اب پوری اسمبلی کی برطرفی کامطالبہ ہے۔ مقررین نے کہاکہ ختم نبوت کے قانون پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیاجاسکتا اور نہ ہی اس قانون سے چھیڑ چھاڑ کرنے والوں کو معاف کیاجاسکتاہے۔ کل جو کہتے تھے کہ 5ججز فیصلہ نہیں دے سکتے آج عوام نے فیصلہ دے دیاہے کہ جو قادیانیوں کے یار ہیں وہ ملک کے غدار ہیں۔ مقررین نے فوج سے مطالبہ کیا کہ ختم نبوت قانون سے چھیڑ چھاڑ کرنے والوں کو فوری گرفتارکرکے سزا دی جائے۔ انہوں نے کہاکہ جو قومی املاک کو نقصان پہنچا رہے ہیں وہ لبیک یارسول اللہ ؐ کے کارکنان نہیں وہ حکومتی گلوبٹ ہیں جو ملک میں انتشار کو ہوا دے رہے ہیں۔ انہوں نے سنٹرل جیل ساہیوال میں نظر بند کارکنوں کی فوری رہائی کامطالبہ کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں