ترقیاتی فنڈ کے نام پر ساہیوال بورڈ نے طلبا کو لوٹنا شروع کر دیا

ساہیوال(نمائندہ خصوصی )اندھیر نگری چوپٹ راجہ، مفت تعلیم کے دعوے کرنے والی حکومت کا ایک اور کارنامہ، ساہیوال بورڈ نے داخلہ فیس کے ساتھ طلبا سے 100 روپے ترقیاتی فنڈ کے طور پر جمع کرنا شروع کر دئیے. ذرائع کے مطابق ساہیوال بورڈ نے نہم ، دہم کے سالانہ امتحانات میں داخلہ فیس کے ساتھ 100 روپے فی طالب علم ترقیاتی فنڈ کے نام پر بٹورنا شروع کر دئیے ہیں.امسال 100 روپے کی وصولی شروع ہو چکی ہے. ہر سال ساہیوال بورڈ کے زیر اہتمام 50ہزار سے زائد طلبا و طالبات میٹر ک کا امتحان دیتے ہیں.ترقیاتی فنڈ کے نام پر جمع کی جانے والی رقم کروڑوں تک جا پہنچے گی. طلبا کے مطابق ساہیوال بورڈ اپنی ناقص مارکنگ پر طلبا انھیں تحفظات ہیں اور مارکنگ کی غلطی کے باوجود انھیں ان کی ری چیکنگ کی فیس واپس نہیں کی جاتی اور ری کاؤنٹنگ ہی کی جاتی ہے اس پر 100 روپے کی وصولی ناانصافی ہے. انھوں نے اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں