اسلام آباد: راستا نہ ملنے کی وجہ سے ایمبولینس میں بچہ جاں بحق

اسلام آباد :فیض آباد ابٹر چینج پر دھرنے نے ایک معصوم بچے کی جان لے لی. تفصیلات کے مطابق بلال نامی بچے کو ایمبولینس میں ہسپتال لے جایا جا رہا تھا مگر مذہبی جماعتوں کی ریلی اور ٹریفک جام کی وجہ سے ایمبولینس کو راستا نہ مل سکا اور بچہ ایمبولینس میں ہی دم توڑ گیا۔’تحریکِ لبیک یارسول اللہ’ اور ‘سنی تحریک’ کے کارکنوں نے فیض آباد پل سے ہو کر گزرے والے چار راستے بند کر رکھے ہیں جس سے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔جلوس کے شرکا کو وفاقی دارالحکومت میں داخلے سے روکنے کے لیے اسلام آباد میں بھی مختلف راستوں پر کنٹینر لگے ہوئے ہیں جس سے ٹریفک کی روانی جمعرات کی صبح بری طرح متاثر ہوئی اور لوگ اپنے دفاتر اور کام کی جگہوں پر وقت پر نہیں پہنچ سکے۔وفاقی حکومت پہلے ہی اہم اور حساس سرکاری عمارتوں کے علاوہ سفارت خانوں پر مشمتل علاقے ریڈ زون کو شپنگ کنٹینر لگا کر بند کر چکی ہے جب کہ راولپنڈی اسلام آباد میں پولیس اور ایف سی کے اضافی دستے بھی تعینات کیے گئے ہیں۔راستوں کی بندش اور دھرنے کے شرکا کے عدم تعاون کی وجہ سے بچے کی موت کی ذمہ داری حکومت اور دھرنا دینی والی مذہبی جماعتوں پر عائد کی جا رہی ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں