بلٹ پروف غلاف کعبہ کی تیاری کا کام شروع کر دیا گیا

مکہ مکرمہ: سعودی حکومت نے غلاف کعبہ کو آگ اور گولی سے نقصان پہنچنے سے بچانے کے لیے خصوصی اقدام کرنے کے لیے تیاری شروع کردی ہے۔
العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مکہ المکرمہ کی ام القری یونیورسٹی کے ماہرین کی ٹیم غلاف کعبہ کی تیاری کے دوران اس میں آگ اور گولی کے خلاف مزاحمت کے لئے استعمال ہونے والے کیمیائی ریشے ’’کیولر‘‘ بھی شامل کرنے پر کام شروع کردیا ہے تاکہ اسے گرمی کی تپش، شدید درجہ حرارت ، آگ اور گولی سے محفوظ بنایا جاسکے۔
غلاف کعبہ کی تیاری اور اس کی دیکھ بھال پر معمور کنگ عبدالعزیز کمپلیکس کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر محمد بن عبداللہ باجودہ کا کہنا ہے کہ جدید ترین تیکنک (نینو ٹیکنالوجی) کے ذریعے کیولر کو خالص ریشم سے بنائے گئے کپڑے کے ساتھ شامل کئے گئے مصنوعی دھاگے کے ان ریشوں میں شامل کیا جائے گا جو غلاف کعبہ کو پھٹنے یا کٹنے سے روکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ برسوں کے دوران گرمی کی شدت بتدریج بڑھ سکتی ہے اسی وجہ سے غلاف کعبہ کو بلٹ اور فائر پروف بنایا جارہا ہے۔واضح رہے کہ غلاف کعبہ کو کسوہ کہاجاتا ہے اور اسے ریشم سے تیار کیا جاتا ہے اور اس پر سونے اور چاندی کے تاروں سے قرانی آیات کندہ کی جاتی ہیں۔ غلاف کی تیاری میں استعمال کیا جانے والا ریشم اٹلی سونے اور چاندی کی تاریں جرمنی سے آتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں