زرداری کی شکل ڈاکوؤں سے ملتی ہے: عمران خان

اسلام آباد: تحریک انصاف کے چئیر مین عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف کی ’’کیوں نکالا‘‘ مہم اور احتساب عدالت کے باہر ہونیوالے ڈرامے کا مقصدمنی لانڈرنگ میں سزا سے بچنا ہے۔اسلام آباد میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف نے کہا کہ اگر انہیں سزا ہوئی تو بیرونِ ملک پڑے ان کے تین سو ارب روپے فریز ہوجائیں گے۔پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری پر تنقید کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ شکل سے ڈاکو لگنے والا زرداری پشاور آکر کہتا ہے کہ خیبرپختونخوا میں کرپشن ہے۔میں پاکستان میں صرف قائد اعظم کو لیڈر مانتا ہوں وہ مسلم لیگ میں گئے اور مسلمانوں کو اکٹھا کیا‘ پی ٹی آئی کی جدوجہد قائد اعظم کی جدوجہد پر مبنی ہے‘ سیاست دو قسم کی ہوتی ہے ایک وہ سیاست ہے جس نے پاکستان بناکردیا اور دوسری سیاست وہ ہے جس نے آج پاکستان کو اس مقام پر پہنچایا آج پاکستان مقروض ہے کوئی پوچھنے والا نہیں جو قائداعظم کی جدوجہد تھی وہی تحریک انصاف کی ہے اپنی ذات کیلئے بات کرنے والے حکمرانوں نے پاکستان کو اس حال تک پہنچایا ہے آج یہ بتانا چاہتا ہوں تحریک انصاف کیوں بنی اور کیا کردار رکھا گیا فوج کہہ رہی ہے وہ آئین اور قانون کے ساتھ کھڑی ہے جبکہ شریف خاندان اپنی کرپشن بچانے کیلئے عدلیہ اور فوج پر تنقید کر رہا ہے احتساب عدالت کے سامنے ڈرامہ کرنے کا مقصد سزا سے بچنا ہے۔ شریف مافیا کی اب ساری کوششیں اپنا سرمایہ بچانے میں لگی ہیں انہیں جمہوریت کی نہیں اپنی دولت کی فکر ہے فوج کو بُرا بھلا کہنے کی بھی صرف ایک وجہ ہے کہ شریف خاندان منی لانڈرنگ کیس کی سزا سے بچ جائے عدلیہ کو بدنام کیا گیا تو اسلام آباد میں عوام کا سمندر لے کر آجائیں گے ہمیں آخری بار سڑکوں پر آنا پڑے گاہمیں دھرنا دینے اور آنسو گیس کھانے کی مشق ہوگئی ہے دنیا میں کہیں یہ قانون نہیں ایک مجرم پارٹی کا سربراہ بن جائے۔ انہوں نے مزید کہا مجھے لگ رہا ہے۔ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کہتے ہیں ہم عدالت کا فیصلہ نہیں مانتے ان کی کوشش ہے شریف خاندان کسی طرح بچ جائے اب کیس سٹیٹ اور شریف خاندان کے مابین ہے اس لئے یہ ہر وہ طریقہ آزمائیں گے جس سے وہ اپنی طرف سے توجہ ہٹادیں فرد جرم عائد ہوگئی تو بیرون ملک ان کا 300 ارب منجمد ہوجائے گا اس لئے ن لیگ کی موجودہ حکومت شریف فیملی کو بچانے میں لگی ہے شریف مافیا کی خواہش ہے کہ انہیں منی لانڈنگ میں سزا نہ ہو شریف خاندان ڈاکے ڈال کر معصوم شکلیں بنا لیتے ہیںجبکہ مجھ پر شہباز شریف اور اسحاق ڈار نے دس دس ارب ہرجانے کے مقدمے کر رکھے ہیںجبکہ آصف زرداری اور فریال تالپور نے میرے خلاف ایک ایک ارب روپے کا مقدمہ کیا ہے آصف زرداری تو شکل سے ہی بڑا ڈاکو لگتا ہے اور وہ چھپا بھی نہیں پاتاجو سینما کے ٹکٹ بیچتا تھا آج اس کے دنیا میں اربوں روپے پڑے ہیں اقتدار میں آکر کمیشن اور آسان طریقے سے پیسہ بنانا کرپشن ہے کرپشن کرکے آج سیاستدان کھرب پتی بن چکے ہیں کرپشن کا مطلب ہی ناجائز ذرائع سے دولت کمانا ہے اقتدار سے پہلے اور بعد میں ان کی کتنی دولت ہے سب خود اندازہ ہوجائے گا۔ انہوں نے کہا آج پاکستان کو نئی سوچ اور سیاست کی ضرورت ہے کرپٹ حکمرانوں نے ایل این جی پر چار سال ضائع کر دئیے عوام کی فلاح و بہبود اور تعلیم پر سرمایہ نہیں لگایا۔ پی ٹی آئی میں وہ لوگ ہوں گے جو ملک کا سوچیں گے کھلاڑی ٹیم کیلئے نہیں کھیلتا تو اچھی ٹیم بھی کامیاب نہیں ہوتی دنیا کہتی ہے پاکستان میں80 کی دہائی کرکٹ کا سنہرا دور تھا لیکن ہمارے ملک میں میرٹ اور موقع نہ رہے بیرون ملک پاکستان سے جانے والوں نے ہر شعبے میں ترقی کی اور اپنی جگہ بنائی ہمارے ہاں ہر شعبے میں ٹیلنٹ ہے لیکن اسے نکھارنے کیلئے سسٹم نہیں اس لئے پی ٹی آئی نے سسٹم کو آگے لے کر جانا ہے ہمارے حکمران پاکستان سے کرپشن کا پیسہ باہر لے گئے لیکن عدالتوں میں ایسے پیش ہوتے ہیں جیسے کشمیر فتح کرلیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں