کرم ایجنسی میں دھماکہ کیپٹن سمیت 4 سیکیورٹی اہل کار شہید

پشاور(ویب نیوز) فاٹا کے علاقےکرم ایجنسی میں بارودی مواد کے دھماکے کے نتیجے میں کیپٹن سمیت 4 سیکورٹی اہلکار شہید اور 3 زخمی ہوگئے۔شہید اور زخمی اہلکارگزشتہ دنوں بازیاب کروائے جانے والے غیرملکیوں کے اغواکاروں کی سرچ ٹیم کا حصہ تھے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نےکرم ایجنسی دھماکےمیں سیکورٹی اہلکاروں کی شہادت پراظہارافسوس کیا ہے۔آئی ایس پی آر کے مطابق کرم ایجنسی کے سرحدی علاقے خرلاچی میں سرچ آپریشن کے دوران پہلے سے نصب بارودی مواد کے پھٹنے سے فوجی افسر سمیت 4 اہلکار شہید اور تین زخمی ہوگئے۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کے مطابق شہید اور زخمی ہونے والے اہلکار کرم ایجنسی سے غیر ملکیوں کی بازیابی کے بعد وہاں اغوا کاروں کی تلاش کے لئے سرچ آپریشن ٹیم کا حصہ تھے۔
آئی ایس پی آر کے مطابق شہید فوجی جوانوں میں کیپٹن حسنین، سپاہی سعید باز، سپاہی قادر اور سپاہی جمعہ خان جب کہ زخمیوں میں نائیک انور ، سپاہی ظاہر اور لانس نائیک شیر افضل شامل ہیں۔دوسری جانب پولیٹیکل حکام کا کہنا ہے کہ دھماکے افغان پولیس چیک پوسٹ کھیوڑہ سے 100 میٹر کے فاصلے پر ہوئے جب کہ دھماکوں کے بعد پاک افغان خرلاچی سرحد بند کردی گئی ہے۔پولیٹیکل حکام کا کہنا ہے کہ واقعے کے بعد سیکورٹی فورسز کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لیتے ہوئے سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔واضح رہے کہ دو روز قبل پاک فوج نے امریکی انٹیلی جنس کی بنیاد پر کرم ایجنسی میں کامیاب آپریشن کر کے کینیڈین خاندان کو بازیاب کرایا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں