نواز شریف کی 9 اکتوبر کو دوبارہ طلبی، بچوں کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری

اسلام آباد: احتساب عدالت نے پیش نہ ہونے پر نواز شریف کے داماد اور بچوں کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے ہیں، جب کہ نواز شریف پر فرد جرم عائد نہیں کی گئی۔ عدالت نے نواز شریف کو 9 اکتوبر کو دوبارہ طلب کرلیا ہے۔
احتساب عدالت اسلام آباد نے برطرف وزیراعظم نواز شریف کے تینوں بچوں حسن، حسین اور مریم نواز اور ان کے داماد کیپٹن صفدر کی دوسری بار عدم پیشی پر ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے، جب کہ نواز شریف پر فرم جرم عائد نہیں کی گئی۔ عدالت نے نواز شریف کو 9 اکتوبر کو دوبارہ طلب کرلیا گیا ہے۔
اسلام آباد کی احتساب کے جج محمد بشیر لندن فلیٹس، العزیزیہ اسٹیل ملز اور آف شور کمپنیوں سے متعلق تین نیب ریفرنسز کی سماعت کی۔ سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کے بچوں حسن نواز، حسین نواز، مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے خلاف تین نیب ریفرنسز احتساب عدالت میں زیر سماعت رہے۔
نوازشریف کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقعے پر جوڈیشل اکیڈمی کے باہرسیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ احتساب عدالت کا کنٹرول پاکستان رینجرز نے سنبھال لیاہے جب کہ پولیس، رینجرز اور ایف سی کے ایک ہزار جوان تعینات ہیں، جوڈیشل اکیڈمی آنے والے راستوں کو سیل کردیا گیا ہے، عمارت کے ارد گرد خاردارتاریں بچھائی گئی ہیں اور جوڈیشل اکیڈمی میں غیر متعلقہ افراد کا داخلہ بند ہے، میڈیا نمائندوں کواندر داخل ہونے کے لئے خصوصی پاسز جاری کیے گئے ہیں، احتساب عدالت میں سماعت 9 بجے شروع ہوگی، احتساب عدالت کے جج محمد بشیر سماعت کریں گے۔
اس سے قبل احتساب عدالت اسلام آباد میں برطرف وزیراعظم نواز شریف دوسری بار پیش ہوئے، اس موقع پر سیکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کیے گئے، جب کہ عدالت کی ہیلی کاپٹر کے ذریعے فضائی نگرانی بھی کی گئی۔ عدالت نے نواز شریف کو ریفرنس کی نقول فراہم کر رکھی ہیں، جب کہ اس سے قبل فرد جرم عائد کرنے کی کارروائی کیلئے دیگر تمام ملزمان کو قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر رکھے تھے۔
نواز شریف کی جوڈیشل کمپلیکس آمد پر کئی ن لیگی رہنماؤں کو عدالتی احاطے میں داخلے سے روک دیا گیا۔ ذرائع کے مطابق میڈیا کے نمائندوں کو احتساب عدالت کے دروازے پرروک لیاگیا، جبکہ نیب ٹیم کو بھی عدالت داخلے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔ پولیس کا مؤقف تھا کہ رینجرز کی ہدایت پر میڈیا کو عدالت میں جانے کی اجازت نہیں۔ رجسٹرار احتساب عدالت کے مطابق ہماری جانب سے میڈیا کے داخلے پر کوئی پابندی نہیں۔ جوڈیشل اکیڈمی کی سیکیورٹی رینجرز اہلکاروں کے سپرد رہی۔
واضح رہے 26 ستمبر کو سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں دائر کیے گئے 3 نیب ریفرنسز پر سماعت ہوئی تھی جس میں ان پرفرد جرم کیلئے 2 اکتوبر کی تاریخ مقررکی گئی تھی۔ عدالت کو فرد جرم عائد کرنے کے لیے تمام ملزمان کی ایک ساتھ عدالت حاضری کا انتظار ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں