کراچی میں چیچہ وطنی کی طرز پر لڑکیوں کو زخمی کرنے والا گروہ متحرک

کراچی: کراچی کے علاقے گلستان جوہر میں پراسرار واقعات سے خوف وہراس پھیل گیا۔گلستان جوہر میں 25اور 26ستمبرکوچار لڑکیاں چاقو کے وار سے زخمی ہوئی تھیں ،نامعلوم افراد نے لڑکیوں کو چاقو یا تیز دھار آلے کے وار سے زخمی کیا۔حملے کی پراسرار وارداتوں میں زخمی ہونے والی ایک لڑکی اور اہل خانہ کا بیان قلم بند کرلیا گیا ہے۔پولیس کے مطابق پیر کو چاقو کے وار سے 3 لڑکیاں اور منگل کو ایک لڑکی زخمی ہوئی تھی۔پولیس نے زخمی ہونے والی ایک لڑکی عروسہ کا بیان ریکارڈ کرلیا ہے اور نجی ٹی وی کے مطابق لڑکی نے بتایا کہ وہ 26 ستمبر کو اپنے گھر والوں کے ساتھ جارہی تھی کہ موٹر سائیکل پر سوار شخص نے پیچھے سے تیز دھار آلے سے وار کیا جس سے وہ زخمی ہوگئی ،حملہ کرنے والا ہیلمٹ پہنے ہوئے تھا۔لڑکی کی والدہ نے بتایا کہ عروسہ ساتویں جماعت کی طالبہ ہے، حملے کے نتیجے میں اسے 8 ٹانکے آئے، پولیس نے مقدمہ درج کرانے کا کہا تھا لیکن ہم نے منع کردیا۔یاد رہے اس سے قبل ساہیوال کی تحصیل چیچہ وطنی میں بھی لڑکیوں کو تیزدھار آلے سے زخمی کرنے کے واقعات شدت اختیار کر گئے تھے اور 6 ماہ چیچہ وطنی میں خوف وہراس کی فضا رہی تھی۔ساہیوال پولیس نے چیچہ وطنی میں لڑکیوں کو زخمی کرنے والے گروہ کو گرفتار کر لیا تھا۔اب کراچی میں اسی قسم کے واقعات کی وجہ سے خوف کی فضا چھائی ہوئی ہے اور والدین لڑکیوں کو اکیلا باہر بھیجنے سے خوفزدہ ہیں. چیچہ وطنی میں اس قسم کے گروہ کو پکڑنے پر 2 لاکھ روپے کا انعام بھی رکھا گیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں