این اے 120: شیر، تیر یا بلا، لاہوریے آج فیصلہ دیں گے

لاہور(خصوصی رپورٹ) لاہور کے تاریخی حلقہ این اے 120 میں آج تاریخی معرکہ ہو گا.چھٹی کے روز سجنے والے میدان میں مسلم لیگ (ن) کی امیدوار بیگم کلثوم نواز ، تحریک انصاف کی یاسمین راشد اور پیپلزپارٹی کے فیصل میر میدان میں ہیں، االیشن کمیشن نے انتخاب کی تیاریاں مکمل کرلی ہیں ۔ آج کے انتخابات میں 39 پولنگ اسٹیشنز پر 100 سے زائد بائیو میٹرک مشینیں استعمال کی جائیں گی ،الیکشن کمشن کے مطابق بائیومیٹرک مشینوں کا استعمال پہلی با ر تجرباتی بنیادوں پر کیا جا رہا ہے۔ این اے 120میں بائیو میٹرک مشینوں سے ووٹرز کی تصدیق کے عمل کا تجربہ کیا جائے گا۔ سکیورٹی اداروں کی جانب سے پولنگ کے لئے سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق این اے 120 لاہور میں آج 17ستمبر کو ملک کی ایک بڑی انتخابی جنگ ہو گی، عوام اور تجزیہ نگاروں کی نظریں اس حلقے پر جمی ہیں۔ماہرین اب تک ہونے والے ضمنی انتخابات میں سے آج کے معرکے کو سب سے بڑا معرکہ قرار دیا جارہا ہے. سابق وزیراعظم نواز شریف کی اس خالی نشست پر مسلم لیگ (ن)کی امیدوار‘ ان کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز ہیں۔ الیکشن کمشن کی جانب سے این اے 120 میں کل 220 پولنگ سٹیشن بنائے گئے ہیں جن میں سے 102 مرد، 98 خواتین اور 19 مشترکہ ہیں۔ حلقے میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 3 لاکھ 21 ہزار 786 ہے۔ مرد ووٹرز ایک لاکھ 79 ہزار چھ سو 42 اور خواتین ووٹرز کی ایک لاکھ 42 ہزار 144 ہیں۔ الیکشن کمشن نے سیکیورٹی انتظامات کو موثر بنانے کے لیے ہر پولنگ سٹیشن پر سی سی ٹی وی کیمرے نصب کیے ہیں، جبکہ سکیورٹی کے لیے رینجرز اور فوجی اہلکاروں کی مدد حاصل ہے ۔این اے 120 کے اہم علاقوں میں امین پارک، کریم پارک، گنج کلاں، بلال گنج، انار کلی، گوالمنڈی، قلعہ گوجر سنگھ، مزنگ، جناح ہال، اسلام پورہ، ساندہ کلاں، موہنی روڈ، چوہان پارک اور بیڈن روڈ شامل ہیں۔حلقے میں پاکستان مسلم لیگ نواز اورپی ٹی آئی کے درمیان کانٹے دار مقابلہ متوقع ہے۔انتخاب کےلئے پولنگ آج صبح 8بجے سے شام 5بجے تک جاری رہے گی ۔ پریذائیڈنگ افسران کو پولنگ کے بعد نتائج فوری جمع کرانے کا حکم دیا گیا ہے ۔ماہرین کے مطابق آج کا انتخاب عوامی شعور کا امتحان ہو گا. لاہوریوں کے دل میں کیا ہے؟ اس کا پتا آج کا انتخاب واضح کر دے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں