ساہیوال، واٹر سپلائی ٹینک میں خاتون کی خود کشی، بلدیہ کی کارکردگی پر سوال

ساہیوال(ایس این این) جہاز گراؤنڈ میں سرکاری پانی کی ٹینکی میں خاتون کی مبینہ خود کشی نے بلدیہ کی کارکردگی کی قلعی کھول کر رکھ دی ہے۔ جمعہ کے روز بدبودار پانی کی شکایت پر ٹینکی سے خاتون کی چار پانچ روزہ پرانی بوسیدہ لاش برآمد ہوئی تھی۔ خاتون کی خودکشی نے بلدیہ کی کارکردگی پر کئی سوالیہ نشان لگا دیے ہیں۔ شہریوں کے مطابق ٹینکی کے ڈھکن پر تالا نہ ہونے کی وجہ سے یہ واقعہ پیش آیا۔ اگر کل کسی نے پانی میں زہر ملا دیا تو کون ذمہ دار ہوگا۔ صاف پانی کی فراہمی تو درکنار یہاں پانی کے سرکاری مآخذ کی حفاظت کا فریضہ بھی بہتر انداز میں ادا نہیں کیا جارہا۔ 150 فٹ بلند ٹینکی پر پہنچنے والی خاتون کو ڈیوٹی پر موجود اہلکار نے کیوں نہ دیکھا؟ ٹینکی پر چڑھنے کا راستہ شاہراہ عام کیوں بنایا گیا؟ کل اس طرح کے مزید واقعات سامنے آئے تو ان کی ذمہ داری کس پر عائد ہو گی۔ دوسری جانب خاتون کی لاش 4 سے پانچ روز ٹینکی میں تیرتی رہی اور علاقہ کے لوگ بدبو دار گندا پانی پیتے رہے۔ شہریوں نے کمشنر ساہیوال سے بلدیہ اہل کاروں کی غفلت کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں