ساہیوال،محکمہ تعلیم میں نائب قاصدکی بھرتیوں میں کرپشن

سا ہیوال(اُاین این آئی) محکمہ تعلیم میں درجہ چہارم کے ملازمین کی بھر تیوں میں 50سے زائد امیدواروں سے ڈیڑھ کروڑ روپے سے زائد کی وصولیوں کے بعد تعیناتیوں کے آرڈر جاری کر دیے۔محکمہ تعلیم کے افسروں کی خفیہ تعیناتیوں کا معاملہ اور نوٹیفکیشن منظرعام پر آگئے جبکہ ان بھر تیوں کے بعد 28فروری کو امیدواروں کے انٹرو یو ملتوی کر نے کا نوٹس لگا کر ہزاروں امیدواروں کو ٹرخا دیا۔وزیرا علیٰ پنجاب فوری نوٹس لیں ذمہ داروں کو معطل کیا جائے۔تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم کے سکولوں میں مالی،نائب قاصد اور لیب اٹینڈنٹ کی بھر تیوں کیلئے ماہ فروری میں96726امیدواروں نے نوکری کیلئے درخواستیں دیں جن میں 413امیدواروں کی مختلف سکولوں میں تعیناتیوں کے لئے انٹرو یز کے بعد انتخاب ہونا تھا لیکن جب پہلے انٹرو یو منسوخ کئے گئے تو28فروری کو انٹر ویو ملتوی کر نے کے نوٹس لگانے کے بعد قبل از وقت ہی 28 فروری کو 50سے زائد امیدواروں کی تعیناتیوں کے آرڈر سی ای ا و ایجوکیشن ڈاکٹر محمد ارشد نے گر لز اور ہائی سکولوں کے ہیڈ ماسٹروں اور ہیڈ مسٹریس سے تعیناتیوں کے احکامات جاری کر وا دئے جن میں محمد متین 58۔فائیو ایل،رفیق110۔نو ایل ،عمر دراز61۔جی ڈی ،اقبال ،سجادا ور مسز عائشہ کے احکامات 110۔نائن ایل ،77۔فائیوآرا ور67۔فور آر ٓکے سکولوں میں جاری کردیے جبکہ محمد عمران نائب اٹینڈنٹ کی تعیناتی کے گورنمنٹ گر لز ہائی سکول67۔فور آر میں چارج رپورٹ بھی د لوا دی گئی ۔جس کے بعد سی ای او ایجوکیشن کی طرف سے امیدواروں کی تو جہ ہٹانے کے لئی15مارچ کو امیدواروں سے دوبارہ انٹر ویو 18مارچ سے 22مارچ تک لینے کا شیڈول جاری کر دیا گیا اور جو امیدورا رہ جائیں گے ان کی24 کو انٹر ویو کا شیڈو ل دے دیا گیا اور مخصووص امیدواروں سے بولیاں لگا کر تاریخ دے دی اور 3لاکھ روپے سی4لاکھ روپے فی تعیناتی بکنگ کا عمل بھی جاری رکھا لیکن اس دوران 28فروری کو کی جانے وا لی تعیناتیوں کے نوٹیفکیشن منظر عام پر آگئے تو امیدواروں نے اس پر شدیدا حتجاج کیا ۔
سی ای او ایجوکیشن اتھارٹی اور متعلقہ سکولوں کے ہیڈ ماسٹروں ور ہیڈ مسٹریس کو فوری طور پر ان کے عہدوں سے ہٹا کر تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا اور28فروری تقرریاں مسنوخ کر نے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں