ساہیوال، سوئی گیس کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ، عوام بے حال

ساہیوال (بیورورپورٹ)شہر بھر میں سوئی گیس کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ شدت اختیار کرگیا۔ گیس کی طویل بندش اور لوڈ شیڈنگ نے شہریوں کاجینا محال کردیا۔ شہریوں نے وزیر اعظم پاکستان،وزیر اعلیٰ پنجاب اور وفاقی وزیر پٹرولیم سے فوری نوٹس لے کر سوئی گیس کی بلا تعطل فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔ تفصیل کے شہربھر کے مختلف گنجان آبادعلاقوں میںسوئی گیس کی بندش سے سٹوڈنٹس،آفس ورکر،مزدور طبقہ اور دیگر شعبہ سے تعلق رکھنے والے شہری پریشان ہیں۔شہری مہنگی ایل پی جی گیس سلنڈر استعمال کرنے پر مجبور ہو چکے ہیں۔شہریوں نے احتجاج کرتے ہوئے اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے دوسری جانب ایل پی جی مہنگی ہونے کے ساتھ ساتھ کوئلے اور لکڑ ی کے دام بھی بڑھ گئے ہیں۔گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کے باعث شہریوں کو مجبوراََایل پی جی گیس خریدنا پڑتی ہے جو گھریلو گیس کی نسبت بہت زیادہ مہنگی ہے۔شہریوں کا کہنا ہے کہ حکومتی وزراء نے واضع طور پر میڈیا پر کہا تھا کہ صبح،دوپہر اور شام کھانا پکانے کے اوقات میں گیس کی لوڈ شیڈنگ نہیں ہوگی لیکن سب اس کے برعکس ہورہا ہے ضلع بھر میں گیس کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ ہورہی ہے جس سے گھریلو صارفین کو پریشانی کا سامنا ہے۔ شہریوں کا کہنا تھاکہ گیس کی لوڈ شیڈنگ کا ٹائم مقرر کیا جائے اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کو فوری طور پر ختم کیا جائے تاکہ لوگوں کو کسی قسم کی پریشانی دوچار نہ ہوناپڑے۔ شہر کی سیاسی،سماجی اور مذہبی تنظیموں نے اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے کہ گیس شہریوں کی بنیادی ضرورت ہے اس لیے اس مسئلے کو ہنگامی بنیادوں پر حل کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں