ساہیوال، فرید ٹاؤن کے باسی گندا پانی پینے پر مجبور

ساہیوال(بیورورپورٹ) میونسپل کارپوریشن کی طرف سے بچھائے گئے صاف پانی کے پائپوں میں گٹروں کا گندا پانی شامل ،لوگ گندہ پانی پینے سے پیٹ کی بیماریوں میں مبتلاء ،خواتین ،بچوں اوربزرگوں نے نہانے اور کپڑے دھونے کے لیے بھی نا قا بل استعمال قرار دے دیا۔میونسپل کارپوریشن کی طرف سے فرید ٹائون کے باسیوں کے لیے مہیا کیا جانے والے پانی میں گزشتہ کئی ماہ سے گٹروں کا گندا پانی آرہا ہے ۔ کارپوریشن کی واٹر برانچ کی اس مجرمانہ غفلت کے باعث فرید ٹائون کے لوگ پیٹ کی مختلف بیماریوں کا شکا ر ہو رہے ہیں۔ گھریلوخواتین کاکہناہے پانی میں اس قدر بد بو آرہی ہے کہ اس پانی سے نہانا اور کپڑے دھونے بھی مشکل ہیں واٹر پائپ اور سیوریج پائپ عرصہ تقریباََ80 سال قبل ڈالے گئے تھے جواب زنگ آلود ہو کر پھٹ چکے ہیں ۔سیویج کے پائپ بھی جگہ جگہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں جس سے گندہ اور صاف پانی آپس میں مکس ہو چکے ہیں۔ شہریوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ فرید ٹائون کی سیوریج لائنوں کو فوری تبدیل کیا جائے اور پینے کے پائپ سیوریج لائنوں سے ہٹا کر مین گلی کی طرف بچھائے جائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں