ساہیوال یونیورسٹی، نئے وی سی کو ناکام بنانے کی کوششیں

ساہیوال(ایس این این) یونیورسٹی آف ساہیوال میں ایڈیشنل وائس چانسلر کی جانب سے یونیورسٹی کے نظام کو بہتر بنانے کی کوششیں خطرے میں۔ یونیورسٹی میں گروہ بندیوں اور سیاست کا آغاز۔ ڈاکٹر زکریا ذاکر کو محاذ آرائی پر اکسایا جانے لگا۔ ذرائع کے مطابق ایڈیشنل وائس چانسلر ڈاکٹر زکریا ذاکر کی جانب سے یونیورسٹی آف ساہیوال کے تعلیمی و انتظامی معاملات کو بہتر کرنے کے لیے کیے جانے والے اقدامات کو یونیورسٹی کی لابی کے ایما پر ایک شہر کی جانب سے عدالت میں چیلنج کروانے کی شنید ہے۔ یونیورسٹی کے طاقت ور گروہ یونیورسٹی آف اوکاڑہ کے وائس چانسلر کو یونیورسٹی آف ساہیوال کے اضافی چارج دینے کے خلاف اندرون خانہ درباری سازشوں میں مصروف عمل ہیں۔ ایک طرف وہ ڈاکٹر زکریا ذاکر کو ایک دوسرے کی منفی رپورٹس پہنچا رہے ہیں اور دوسری جانب انھیں ناکام بنانے کے لیے پس پردہ کوشاں ہیں۔ یونیورسٹی کے انھی گروہوںکی اس سیاست کی بنا پر یونیورسٹی باقی یونیورسٹیز سے پیچھے ہے۔ یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر کو بھی اسی گروہی سیاست نے الزامات سے دوچار کر کے نکلنے پر مجبور کیا تھا۔ یونیورسٹی آف ساہیوال میں بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی کیمپس کے دوران تعینات کیے گئے انتظامی افسران اپنی اجارہ داری قائم کرنے اور ساہیوال یونیورسٹی کو ناکام بنانے کے درپے ہیں اور اپنے جانشینوں کے ذریعے درباری سازشیں کرنے میں مصروف عمل ہیں۔ڈاکٹر زکریا ذاکر نے یونیورسٹی آف اوکاڑہ کو جس طرح ترقی دی ہے انھیں انتظامی چارج ملنے کے بعد یونیورسٹی آف ساہیوال کے سازشی عناصر کی ریشہ دوانیوں میں اضافہ ہوگیا ہے اور ڈاکٹر زکریا ذاکر کے ساتھ ساتھ طلبا کو بھی اپنی سیاست کا حصہ بنانے کی کوششوں میں مصروف ہیں جس سے یونیورسٹی کا مستقبل خطرے میں پڑ گیا ہے۔ ساہیوال کے سنجیدہ تعلیمی حلقوں نے گورنر پنجاب سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں