ایمرسن کالج ملتان یونیورسٹی میں تبدیل،ساہیوال کے لیکچررز کا احتجاج

ساہیوال(بیورورپورٹ)گورنمنٹ ایمرسن کالج کو یونیورسٹی میں بدلنے کے خلاف گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ بوائز کالج ساہیوال کے پروفیسرز،طلباء اور طالبات نے حکومتی کی پالیسیوں کے خلاف سیاہ پٹیاں باندھ کر احتجاج اور نعرے بازی کی۔گورنمنٹ کی جانب سے ایمرسن کالج کو یونیورسٹی کا درجہ دینے کے خلاف ساہیوال میں گورنمنٹ پوسٹ گریجوایٹ بوائز کالج کے پروفیسرز،طلباء اور طالبات نے کالج میں سیاہ پٹیاں باندھ کر احتجاج کیا اور حکومتی پالیسیوں کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔پروفیسر اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن ساہیوال ڈویژن کے جنرل سیکرٹری پروفیسر بلال باجوہ نے احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کالج اساتذہ اور طلباء کا استحصال کر رہی ہے کالجز کو یونیورسٹی بنانے سے غریب طلباء کی تعلیم کا حرج ہونے کے ساتھ پروفیسرز کی انڈکشن نہیں ہوسکے گی۔ تعلیمی پالیسیاں بنائی جائیں کالجز کو یونیورسٹیز میں بدلنے سے فیسوں میں ہزار گنا اضافہ ہوجائے گا جو عام طلباء کے لئے انتہائی مشکل ہوجائے گی۔ڈویژنل سیکرٹری اطلاعات پروفیسر عمران جعفرکمیانہ نے کہا کہ ہم کالج کیڈر کو کسی صورت نہیں بدلنے دیں گے حکومتی دعوے تو یہ تھے کہ مفت تعلیم ہوگی مگر اس وقت پرائیویٹ مافیا کو پرموٹ کرنے کے لئے ایڑھی چوٹی کا زور لگایا جا رہا ہے مگر ہم ان غریب طلباء کا استحصال کسی صورت نہیں ہونے دیں گے۔ اس موقع پر پروفیسر شفیق بٹ، پروفیسر شبیر ثاقب،پروفیسر عابد شیخ، پروفیسر شیراز اور پروفیسر رانا عثمان کے علاؤہ دیگر پروفیسرز اور طلباء کی کثیر تعداد موجود تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں