ساہیوال، ٹریفک بے قابو،چالان کی تاڑ میں کھڑےاہل کار

ساہیوال(ایس این این) ساہیوال میں ٹریفک پولیس اہل کاروں نے اپنی اصل ڈیوٹی کی بجائے ریونیو بڑھانے پر توجہ مرکوز کر لی۔ٹریفک قابو ہو یا بے قابو، ٹریفک پولیس کے اہل کار چوراہوں میں موٹر سائیکل کھڑی کر کے چالان کی گھات لگائے کھڑے رہتے ہیں۔ ساہیوال شہر میں ٹریفک کے مسائل کم ہونے کی بجائے بڑھتے جا رہے ہیں۔ ساہیوال کے ایک تفصیلی جائزے کے مطابق ساہیوال میں بیرون لاری اڈہ میں صبح سویرے ٹریفک پولیس اہل کار غیر قانونی ویگن اڈہ مالکان اور بھتہ خوروں سے گپ شپ میں مصروف رہتے ہیں اور ان کی موجودگی میں بسیں اور گاڑیاں ممنوعہ جگہ پر مسافروں کو سوار کرتی ہیں۔ کنڈکٹر حضرات روزانہ کی بنیاد پر پولیس اہل کاروں کی ‘”خدمت” کرتے ہیں۔ بعض اوقات پولیس اہل کاروں کی سواریاں بھی مفت بٹھائی جاتی ہیں۔ جہاز گراؤنڈ چوک اور بیرون لاری اڈہ میں اوور ہیڈ برج پر بیچ سڑک میں موٹر سائیکل کھڑی کرکے کئی اہل کار دیہاتیوں کا چالان کرتے نظر آتے ہیں جب کہ اسی جگہ سٹاپ نہ ہونے کے باوجود مسافر گاڑیاں مسافر اتارتی اور چڑھاتی ہیں مگر ان سے کوئی باز پرس نہیں کی جاتی۔ لیہ کی طرف جانے والے ایک ہائی روف سروس پر ساہیوال سے ایک ٹریفک پولیس اہل کار روزانہ چیچہ وطنی اور پیر محل ڈیوٹی کے لیے مفت آتا جاتا ہے اس لیے اس سروس کو بھی کھلی چھوٹ دی جاتی ہے۔ دوسری جانب اوور ہیڈ برج، ہائی سٹریت، جوگی چوک، مشن چوک، پاک پتن چوک میں ٹریفک جام ہوجاتا ہے مگر ٹریفک پولیس اہل کار ٹریفک بحالی کے لیے کوئی کارروائی نہیں کرتے بلکہ موقع سے غائب ہو جاتے ہیں۔ صبح سویرے شہر میں داخل ہونے والی گاڑیوں میں سے متعدد کے چالان کیے جاتے ہیں کیوں کہ ٹریفک پولیس کے اہل کار گھات لگائے چالان کے انتطار میں ہوتے ہیں۔ ساہیوال ٹریفک پولیس کی یہ تمام تر کاروائیاں پولیس کے فرائض پر سوالیہ نشان ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں