ساہیوال، طالب علم اغوا، پولیس بازیابی میں ناکام

ساہیوال(بیورورپورٹ)فرسٹ ایئرکاطالب علم اڑھائی ماہ گزرنے کے باوجودبازیاب نہ کرایاجاسکا،خاتون سمیت دس ملزموں نے بیٹے کو جال میں پھنساکرگھرسے لاکھوں کی چوری کرائی اورمال ہڑپ کرنے کیلئے اغواء کرکے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا،میرے بیٹے کوقتل کرنے کی مجھے دھمکیاں دی جارہی ہیں،پولیس نے سازبازہوکرگرفتارملزموں کورہاکردیا،آرمی چیف،جنرل آصف غفور،وزیراعلیٰ،آئی جی پولیس سے نوٹس لینے کی اپیل۔تفصیلات کے مطابق آڑھتی غلام رسول نے یہاں نجی ہوٹل پر ایک پرہجوم پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایاکہ چندماہ قبل شادمان ٹاؤن ساہیوال کی رہائشی انیلہ عمران نے بیٹے میناررسول کو اپنے جال میں پھنساکرگھرسے 23تولہ زیورات،موٹرسائیکل،ایک لاکھ روپے نقدی اورموبائل فون وغیرہ کل مالیتی 33لاکھ روپے کا سامان چوری کروایااوراسے ہڑپ کرنے کیلئے اپنے دیگرساتھیوں سدیش،عمران،ذیشان،عدنان،عرفان اورعثمان کی مددسے اغواء کراکرنامعلوم مقام پر منتقل کردیا،انہوں نے بتایاکہ ملزم سادہ لوح لڑکوں کو بیرون ملک بھیجنے،نوکری دلانے اورپسند کی شادی کرانے کا جھانسہ دیکرانہیں اغواء کرکے رقم ہتھیاتے ہیں۔میں معززین علاقہ کے ہمراہ پنچائت کرکے بیٹے وسامان کی واپسی کا مطالبہ کرچکاہوں لیکن ملزم بہت چالاک ہیں جنہوں نے مقامی تھانہ فریدٹاؤن کے ایس ایچ اوزمان وٹوکواپنے ساتھملارکھاہے جومیرے بیٹے کو بازیاب کرانے اورمال مسروقہ برآمد کرنے کی بجائے ملزموں کی زبان بول رہے ہیں اوردانستہ طور پرمقدمہ خارج کرنے کے درپے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ملزم مجھے مختلف غیرملکی نمبروں سے فون کرکے بیٹے کو قتل کرنے کی دھمکیاں دے رہیں اورایس ایچ اوبھی کہہ چکاہے کہ تم مقدمہ واپس لے لوورنہ ملزم تمہارے بیٹے کو نقصان پہنچائیں گے۔انہوں نے کہاکہ مقامی پولیس کوئی کاروائی نہیں کررہی اورایس ایچ اوزمان وٹواعلیٰ افسران کو غلط بریف کررہے ہیں جبکہ حقیقت میں ملزموں کی سرپرستی کے مرتکب ہورہے ہیں۔ایس ایچ اوزمان وٹونے موقف دیتے ہوئے بتایاکہ میناررسول اپنے والد سے ناراض ہوکرگھرچھوڑکرگیاہے جس کاویڈیوبیان بھی سامنے آچکاہے۔متاثرہ خاندان نے آرمی چیف جنرل قمرجاویدباجوہ،جنرل آصف غفور،وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار اورآئی جی پنجاب پولیس انعام غنی سے نوٹس لیکرفوری کاروائی کامطالبہ کیاہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں