ساہیوال،43 سال سے کرائے کی بلڈنگ میں چلنے والےسکول کی سُنی گئی

ساہیوال(ایس این این) 43 سال سے کرائے کی بلڈنگ میں چلنے والے سرکاری سکول کی پہلی بار سنی گئی۔ سی او ایجوکیشن ساہیوال ڈاکٹر ارشد کا ڈی ای او ایجوکیشن سمیعہ انور کے ہمراہ 40 سال سے کرائے کی بلڈنگ میں چلنے والے سکول کا دورہ،محکمہ تعلیم کو سکول کے لیے بلڈنگ یا متبادل جگہ فراہم کرنے کی سفارش۔ سرکاری اطلاعات کے مطابق سی سی او ایجوکیشن ڈاکٹر ارشد نے آج راج پورہ میں واقع گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول ایم سی 13 کا ہنگامی دورہ کیا۔ اس موقع پر ڈی ای او ایجوکیشن سمیعہ انور بھی ان کے ہمراہ تھیں۔ سی ای او نے سکول میں صفائی اور تزئین و آرائش کے انتظامات کو تسلی بخش قرار دیا۔ ڈی ای او ایجوکیشن سمیعہ انور نے سی ای او کو بتایا کہ مذکورہ سکول 43 سال سے کرائے کی عمارت میں چلایا جارہاہے۔جس کا کرایہ حکومت پنجاب ادا کرتی ہے۔ سی ای او نے ڈی ای او کی بریفنگ پر سکول کو متبادل جگہ فراہم کرنے کی سفارش کی ۔ یہ پہلا موقع ہے کہ بچیوں کے اس سکول کے لیے جگہ کی فراہمی کی سفارش سرکاری سطح پر کی گئی ہے۔ اہل علاقہ کے مطابق اس سکول کو جگہ کی فراہمی کے لیے کئی بار حکومت کو درخواست دی گئی تھی لیکن کسی نے نوٹس نہ لیا۔ 43 سال سے اس سکول کو کرائے کی وجہ سے مختلف مکانات میں شفٹ کیا گیا اور کرائے کی عدم فراہمی پر کئی بار سکول کا سامان مالکان نے باہر بھی نکلوایا مگر ٹیچرز کھلی جگہوں پر اپنی مدد آپ کے تحت بچیوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کرتی رہیں۔ اہل علاقہ نے سی ای او کی جانب سے جگہ کی عدم دستیابی کا نوٹس لینے اور حکومت کو جگہ فراہم کر نے کی سفارش پر سی ای او کو خراج تحسین پیش کیا ہے تاہم ان کا مطالبہ ہے کہ اس سکول کو کسی اور علاقے کے سکول میں ضم نہ کیا جائے کیوں کہ اس طرح علاقےکی بچیوں کوحصول علم کے لیے دوسرے علاقوں میں جانا پڑے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں