موٹر وے، زیادتی کا شکار خاتون کا DNA ملزم سے میچ ہو گیا

لاہور(ایس این این )موٹر وے پر لاہور سے گوجرانوالہ جانے والی خاتون سے زیادتی کے کیس کی تحقیقات میں پولیس کو اہم پیش رفت ہوئی ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق زیادتی کا شکار خاتون سے حاصل کیئے گئے نمونے ملزم کے ڈی این اے نمونے سے میچ کر گئے ہیں۔پولیس ذرائع کے مطابق فارنزک سائنس ایجنسی کے ڈی این اے بینک میں ملزم کا ڈی این اے سیمپل پہلے سے موجود تھا، ملزم کا جرائم پیشہ ریکارڈ بھی ہے۔ملزم کا نام مبینہ طور پر عابد بتایا جا رہا ہے جس کا تعلق بہاولنگر سے ہے.ذرائع نے یہ بھی بتایاہے کہ موٹر وے پر خاتون سے زیادتی کے کیس کے ملزم سے متعلق اس اہم پیش رفت کے باوجود ابھی ملزم کی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔واضح رہے کہ 3 روز قبل لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹر وے پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کا واقعہ پیش آیا ہے۔
درندہ صفت 2 افراد نے موٹر وے پر کھڑی گاڑی کا شیشہ توڑ کر خاتون اور اس کے بچوں کو نکالا، موٹر وے کے گرد لگی جالی کاٹ کر قریبی جھاڑیوں میں لے گئے اور خاتون کو بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا۔ملزمان خاتون سے ایک لاکھ روپے نقد، طلائی زیورات اور اے ٹی ایم کارڈز بھی لے گئے تھے۔متاثرہ خاتون لاہور سے گوجرانوالہ جا رہی تھیں اور کار کا پیٹرول ختم ہونے پر کار موٹروے پر کھڑی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں