چیچہ وطنی، پنجاب بنک کے عملے کی صارفین سے بدتمیزی عروج پر

چیچہ وطنی(ایس این این) بنک آف پنجاب چیچہ وطنی برانچ کے سٹاف کی صارفین سے بدتمیزی معمول بن گئی.رقوم جمع کروانے اور نکلوانے والے تنخواہ دار اور پنشنرز طبقے ناروا سلوک، بد تمیزی ۔ذرائع کے مطابق ریلوے روڈ چیچہ وطنی کے ملازمین کی جانب سے صارفین سے بدتمیز ی کی شکایات زبان زد عام ہو چکی ہیں. بنک سے رقم نکلوانے کے لیے آنے والے صارفین کو چیکس کیش کروانے کے لیے گھنٹوں انتظار کروایا جاتا ہے. انتظار کی شکایت کرنے والے صارفین کو بدتمیزی سے “اپنا چیک واپس لے جاؤ” کہا جاتا ہے. مختلف محکموں کے کئی ملازمین کے اے ٹی ایم کارڈز وصول کرنے کے میسجز موصول ہونے کے باوجود مذکورہ بنک کا عملہ کارڈ دینے سے انکار کر دیتا ہے. کئی ملازمین کے موبائل نمبرز بھی اپ ڈیٹ نہیں کیے گئے جس بنا پر ان کے اے ٹی ایم کارڈز فعال نہیں ہو سکے. شکایت کی صورت میں صارفین کو برا بھلا کہا جاتا ہے اور گارڈز کی مدد سے انھیں بنک سے نکالنے کی دھمکیاں دی جاتی ہیں. ذرائع کے مطابق گزشتہ دنوں رقم نکلوانے کے لیے جانے والے ایک صارف نے جب چیک کیش ہونے میں دیر پر احتجاج کیا تو پہلے انھیں چیک واپس لے جانے کا مشورہ دیا گیا اور بعد ازاں پیسے کاؤنٹر پر پھینک دئیے گئے.صارف نے بدتمیزی پر رقم لینے سے انکار کیا تو گارڈز نے بدتمیزی شروع کر دی. صارفین نےسٹیٹ بنک آف پاکستان سے پنجاب بنک چیچہ وطنی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں