ساہیوال، طالبہ پر خاتون ٹیچر کا مبینہ تشدد، انکوائری کمیٹی قائم

ساہیوال(بیورورپورٹ)سی ای اوایجوکیشن نے بچی پرٹیچرکے تشددکانوٹس لے لیا،دوروزمیں انکوائری مکمل کرکے رپورٹ کرنے کی ہدایت۔چیف ایگزیکٹوآفیسرڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی محمدسجاداسلم نے کوٹ الہ دین نمبر2میں رحیم پبلک مڈل سکول ساہیوال میں پرنسپل گلنازاور ٹیچرشمائلہ کا10 سالہ معصوم بچی عائشہ قیصرپر وحشیانہ تشددکی خبروں کا نوٹس لے کر ڈپٹی ڈی ای اوساہیوال انیس کمیانہ کو انکوائری افسرمقررکرکے دوروزمیں رپورٹ پیش کرنے کاحکم دیاہے۔یادرہے کہ گزشتہ روز کوٹ الہ دین نمبر2گلی نمبر1کے رہائشی محمدقیصرنذیرکی 10سالہ بیٹی عائشہ قیصرمحلہ میں واقع رحیم پبلک ماڈل سکول میں زیرتعلیم تھی جس کو ریاضی کا ٹیسٹ یادنہ کرنے پر سکول پرنسپل گلنازکی موجودگی میں ٹیچرشمائلہ نے بدترین تشددکانشانہ بنایا تھا۔والدین نے ڈپٹی کمشنرمحمدزمان وٹو،سی ای اوایجوکیشن سے تشددکے ذمہ داران کیخلاف مقدمہ درج کرانے،سکول کو سیل کرنے اوررجسٹریشن کی منسوخی کامطالبہ کیاتھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں